پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج یوم یکجہتی کشمیر منایا جا رہا ہے

وزیر اعظم و صدر مملکت کے مظلوم کشمیریوں کیلئے یکجہتی کے پیغامات

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن)پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج یوم یکجہتی کشمیر منایا جا رہا ہے جس کا مقصد مقبوضہ کشمیر کے عوام کو حق خود ارادیت اور بھارتی مظالم کے خاتمے کے لیے آواز اٹھانا ہے۔بھارتی مظالم کا شکار کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے دن پوری پاکستانی قوم اپنے مظلوم کشمیری بہن بھائیوں کے لیے آج ہم آواز ہے اور واضح پیغام دے رہی ہے کہ پاکستانیوں اور کشمیریوں کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں۔آج دنیا کو یہ باور کرایا جائے گا کہ خطے کا امن کشمیریوں کی حق خود ارادیت سے وابستہ ہے۔ اسلام آباد، لاہور، کراچی، پشاور، کوئٹہ سمیت کئی شہروں میں ریلیوں اور تقاریب کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔
یوم کشمیر کے موقع پر قابض بھارتی فوج اور بھارتی مظالم کے خلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاجی ریلیاں بھی نکالی جا رہی ہیں اور ساتھ ہی قابض بھارتی فورسز کے جبر کے خلاف سینہ سپر کشمیری ماؤں، بہنوں اور بھائیوں کو خراج تحسین پیش کیا جا رہا ہے۔
یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں آج مختلف شہروں میں تقاریب منعقد کی جا رہی ہیں اور ملک بھر میں آج عام تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے جب کہ اسکولوں میں اس حوالے سے تقریری مقابلے اور مباحثے منعقد کیے جا رہے ہیں۔
وزیراعظم نے یوم یکجہتی پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کشمیریوں کے ساتھ ہمیشہ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑا رہے گا اور اپنی مکمل اخلاقی سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ آج یوم یکجہتی کشمیر کے طور پر منایا جانا ہماری جانب سے اپنے کشمیری بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ مکمل حمایت کا اعادہ ہے، کشمیریوں کو بھارت نے چھ ماہ سے غیرانسانی حراست اور مواصلاتی ناکہ بندی کا نشانہ بنایا ہوا ہے۔کشمیریوں، مسلم امہ، پاکستان اور عالمی برادری نے بھارت کی جانب سے انصاف و قانون کی پامالی کے عمل کو رد کر دیا۔
انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں نو لاکھ سے زائد قابض افواج کی تعیناتی سے اسی لاکھ کشمیریوں کو قید کر دیاہے ، ہزاروں بے گناہوں کو جبری حراست کا شکار جبکہ ہزاروں نوجوانوں کو غائب کرکے نامعلوم مقامات پر قید ہیں۔ ایسی جاں سوزگھٹن اور بنیادی حقوق کی پامالی کی تاریخ میں کم ہی مثالیں ملتی ہیں، یہ بھارت کی ریاستی دہشت گردی کا حقیقی مظہر ہے۔
وزیر اعظم عمران خان نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے اور مواصلاتی بلیک آوٹ کا فی الفور خاتمہ کیا جائے، بھارت کے غیر قانونی اور یک طرفہ اقدامات کو واپس لیا جائے، ناجائز طور پرغیر قانونی حراست میں لئے گئے تمام افراد کو رہا کیا جائے، بھارت کے کالے قوانین کو فوری طور پر کالعدم قرار دیا جائے۔ عالمی انسانی حقوق کیلئے کام کرنے والی تنظیموں اور عالمی میڈیا کو مقبوضہ علاقے میں صورتحال کا جائزہ لینے کی اجازت دی جائے ۔ جبکہ بین الاقوامی برادری عالمی امن کو لاحق خطرات کی روک تھام میں اپنا کردار ادا کرے۔
دوسری جانب صدر مملکت نے یوم یکجہتی کشمیر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام گزشتہ 70 سال سے اپنے حق خودارادیت کے حصول کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں، بھارت نے غیر قانونی اور ظالمانہ اقدامات کے ذریعے مقبوضہ کشمیر پر جابرانہ تسلط قائم کر رکھا ہے، پاکستان کشمیری عوام کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا، بھارت انتہا پسندانہ ہندوتوا سوچ کے نرغے میں ہے اور آگ سے کھیل رہا ہے، عالمی برادری مقبوضہ کشمیر کے عوام کو ان کا حق خودارادیت دلانے اور بھارت کے اندر مسلمانوں کے خلاف امتیازی سلوک بند کرانے کیلئے کردار ادا کرے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *