موٹاپے کا شکار صادق آباد کا نور الحسن انتقال کرگئے

لاہور: (پاکستان فوکس آن لائن) موٹاپے کا شکار 330 کلو وزنی صادق آباد کا رہائشی نورالحسن لاہور کے شالیمار ہسپتال میں انتقال کر گیا۔
ابتدائی اطلاعات کے مطابق نور الحسن کی موت ہارٹ اٹیک کی وجہ سے ہوئی، نور الحسن کے ڈاکٹر معاذ نے بتایا کہ آج ہسپتال کے آئی سی یو میں خاتون مریضہ کی ہلاکت کے بعد مریضہ کے لواحقین نے ہسپتال میں ہنگامہ آرائی کی جس کے بعد ہسپتال کے آئی سی یو سے ڈاکٹر اور عملہ بھاگ گیا، آئی سی یو میں 2 گھنٹے تک کوئی موجود نہ تھا، ہسپتال میں توڑ پھوڑ کی وجہ سے نور الحسن کی موت واقع ہوئی۔نورالحسن کی بیوی نے بتایا کہ آپریشن کے بعد نورالحسن ہاتھ پاؤں کو حرکت دے رہا تھا بالکل ٹھیک تھا۔ نورالحسن کے بیٹے اور بھتیجے نے آرمی چیف سے اپیل کی ہے کہ میت کو ائیر ایمبولینس کے ذریعے صادق آباد منتقل کیا جائے۔ نورالحسن کی وفات پر سارا شہر سوگوار ہے، شہریوں کی بڑی تعداد گھر کے باہر جمع ہے۔
نورالحسن کو 17 جون کو صادق آباد سے شالامار ہسپتال لایا گیا، 10 روز تک شالامار ہسپتال میں نور الحسن کے میڈیکل فٹنس ٹیسٹ لیے گئے، میڈیکل بورڈ کی اجازت کے بعد 11 ویں روز نور الحسن کا آپریشن کیا گیا، آپریشن کے بعد نور الحسن کو آئی سی یو میں منتقل کر دیا گیا تھا۔ڈاکٹروں نے نور حسن کا آپریشن کرکے اس کے معدے کا سائز چھوٹا کردیا تھا اور آپریشن کو کامیاب قرار دیا تھا۔ آپریشن کے بعد نورحسن کو آئی سی یو میں داخل کیا گیا تھا جہاں وہ پیر کے روز اچانک انتقال کرگیا۔واضح رہے کہ صادق آباد سے تعلق رکھنے والے موٹاپے کے شکار ٹیکسی ڈرائیور نورحسن کو گھر کی دیوار توڑ کر باہر لایا گیا تھا اور ائیرایمبولینس کے ذریعے لاہور بھجوایا گیا تھا۔نورحسن کا وزن 330 کلو تھا اور وہ چلنے پھرنے سے بھی قاصر تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *