کورونا وبا جلد ختم ہوتی نظر نہیں آ رہی،عالمی ادارہ صحت نے خبردار کر دیا

کئی ممالک غلط سمت میں جارہے ہیں ، وائرس بدستور شہریوں کا سب سے بڑا دشمن ہے

جنیوا: (پاکستان فوکس آن لائن) عالمی ادارہ صحت نے کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے بعض ممالک کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات پرعدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انتباہ جاری کیا ہے کہ کئی ممالک کی کوششیں غلط سمت میں ہیں۔ میڈیا بریفنگ کے دوران عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ٹیڈروس ادہانوم نے کہا کہ جس حد تک مستقبل کے متعلق اندازہ لگا سکتے ہیں اس کے تحت حالات معمول پر جلد آنے کے امکانات نہیں ہیں۔خبر رساں ایجنسی کے مطابق عالمی ادارہ صحت کو ملنے والی رپورٹس اس بات کی غماز ہیں کہ صرف اتوار کے دن کورونا وائرس کے 30 ہزار نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا ہے کہ اگر حکومتوں نے مناسب اقدامات نہ اٹھائے، لوگوں نے سماجی فاصلے کو مدنظر نہ رکھا، ماسک پہننے سمیت ہاتھوں کودھونے کی عادت نہ اپنائی تو مہلک وبا کے مزید برے اثرات مرتب ہوں گے۔ عالمی ادارہ صحت کے ڈی جی ڈاکٹر ٹیڈروس نے واضح طور پر کہا کہ جن ممالک نے لاک ڈاؤن میں نرمی میں کی اوروہاں احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد میں سستی ہوئی تو وہاں نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔
خبررساں ادارے کے مطابق انہوں نے کورونا وائرس کو عوام کا اولین دشمن قرار دیتے ہوئے کہا کہ متعدد ممالک کی حکومتوں کے اقدامات اور شہریوں کی سرگرمیاں وائرس کی سنگینی کا اظہار نہیں کررہی ہیں۔عالمی وبا قرار دیے جانے والے کورونا وائرس کے باعث دنیا میں پانچ لاکھ 72 ہزار 207 افراد اپنی جانوں کی بازیاں ہار چکے ہیں جب کہ متاثرین کی تعداد ایک کروڑ 30 لاکھ 61 ہزار 725 ہو گئی ہے۔دستیاب اعداد و شمار کے مطابق اپنے یقین، مضبوط قوت ارادی اور طاقتور مدافعتی نظام کی بدولت پوری دنیا میں اب تک 76 لاکھ آٹھ ہزارافراد اس مہلک وبا کو شکست بھی دے چکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *