مکران کوسٹل ہائی وے پر 14 افراد کو بس سے اتار کر قتل کر دیا گیا

کوئٹہ: (پاکستان فوکس آن لائن) مکران کوسٹل ہائی وے پر نامعلوم افراد نے مسافر بس پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 14 افراد جاں بحق ہوگئے۔ لیویز ذرائع کے مطابق مکران کوسٹل ہائی وے پر بوزی ٹاپ کے قریب نامعلوم مسلح افراد نے مختلف بسوں کو روک کر مسافروں کے شناختی کارڈز چیک کیے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ 15سے 20 نامعلوم مسلح افراد نے مخصوص یونیفارم میں کراچی سے گوادر آنے اور جانے والی 5،6 بسوں کو روکا۔ مسلح دہشتگردوں نے شناختی کارڈز چیک کرنے کے بعد 14 مسافروں کو بسوں سے نیچے اتار کر فائرنگ کر کے قتل کر دیا اور موقع سے فرار ہو گئے۔ پولیس کے مطابق تمام مسافروں کو ہاتھ باندھ کر قتل کیا گیا ۔ دہشتگردی کی یہ اندوہناک واردات رات 12 سے ایک بجے درمیان ہوئی۔لیویز حکام کے مطابق بسوں سے اتارے گئے دو افراد ملزمان کے چنگل سے بچ نکلنے میں کامیاب ہوئے جب کہ جن لاشوں کی شناخت ہو گئی ہے انہیں آبائی علاقوں کو روانہ کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں کہا ہے کہ ہزارہ پر حملہ، پھر حیات آباد میں ٹی ٹی پی اور پھر آج کوسٹل ہائی وے پر بہیمانہ واقعہ ، ایک منظم پیٹرن نظر آرہاہے۔ ہم نے امن کے لیے بہت قربانی دی ہے ۔ انشااللہ ہم ان واقعات کے ذمہ داران کو مثال عبرت بنادیں گے ۔ دہشتگردی کی جنگ میں بڑی کامیابیاں حاصل کی ہیں لیکن جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی ۔

وزیراعلی بلوچستان جام کمال خان نے کوسٹل ہائی وے پر بس مسافروں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانے کے واقعہ کی مذمت کی ہے۔ جام کمال خان نے کہا کہ بزدل دہشت گردوں نے بے گناہ نہتے مسافروں کو قتل کرکے بربریت کی انتہا کی۔ امن کے دشمن اپنے بیرونی آقاؤں کے اشارے پر اپنے ہی لوگوں کا خون بہا رہے ہیں۔ بلوچستان کے عوام بیرونی عناصر کے ایجنڈہ پر عمل پیرا دہشت گردوں کو نفرت کی نگا ہ سے دیکھتے ہیں۔ دہشت گردی کا واقعہ ملک کو بدنام کرنے اور بلوچستان کی ترقی کو روکنے کی گھناؤنی سازش ہے۔
وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کوسٹل ہائی وے پر فائرنگ کر کے مسافروں کو قتل کرنے کے افسوسناک واقعہ کی شدید مذمت اور افسوس کا اظہار کیا۔عثمان بزدار نے کہا کہ مسافروں کو قتل کرنے کا واقعہ بربریت ہے اور اس المناک واقعہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ ہماری ہمدردیاں مقتولین کے لواحقین کے ساتھ ہیں اور سوگوار خاندانوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔سابق صدر آصف زرداری نے کہاہے کہ مکران کوسٹل ہائی وے پر معصوم لوگوں کا قتل وحشیانہ فعل ہے۔معصوم انسانوں کا خون بہانے والے نا قابل معافی ہیں ۔نیشنل ایکشن پلان پر من و عن عمل کیا جاتا تو ایسے سانحے نہ ہوتے ۔دہشت گردی ایک لعنت ہے اس کو ختم کرنا ہوگا ۔شہیدوں کے ورثاء کے غم میں شریک ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *