آزادی مارچ، پولیس نے کیٹرنگ، ٹینٹ، ساؤنڈ سسٹم فراہم کرنے پر پابندی لگادی، تاجروں کا انکار

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) وزارت داخلہ کی ہدایت پر وفاقی پولیس نے آزادی مارچ کو ناکام بنانے کیلئے اچھوتے احکامات جاری کر ڈالے جب کہ ضلع بھر میں ساؤنڈ سسٹم، کیٹرنگ، ٹینٹ سروس، ہوٹلز ،موٹلزسے منسلک کاروباری افراد کو دھرنا شرکاکو خدمات فراہم کرنے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔
مولانافضل الرحمن کی جانب سے آزادی مارچ کے اعلان پرآزادی مارچ کو ناکام بنانے کے لیے وفاقی پولیس نے احکامات صادر کئے ہیں ، کیٹرنگ ، ٹینٹ سروس ،ہوٹل ،موٹل ،گیسٹ ہاؤس ،جنریٹر ،ورکشاپ ،ہارڈ ویئر سٹور،ویلڈنگ ورکشاپ، ساؤنڈ سسٹم ،کرین اور ایکسیویٹر مشین کی دھرنا شرکاکو خدمات فراہم کرنے کی صورت میں پولیس کارروائی کی دھمکی دیدی گئی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اس ضمن میں اسلام آباد ضلع کے بائیس تھانوں نے مذکورہ کاروبار کرنے والے افراد کو پیشگی نوٹسز جاری کردیے گئے ہیں۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق نوٹسز میں مذکورہ کاروبارسے منسلک افراد کودھمکی دی گئی ہے کہ دوران دھرنا آپ کسی قسم کی اشیاء ،سامان اورسہولت فراہم نہیں کریں گے، اگرآپ کسی ایسی سرگرمی میں ملوث پائے گئے تو آپ کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
ادھر اسلام آباد کی تاجر برادری نے مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کو ناکام بنانے کیلیے دھرنے کے شرکاکو کھانا،کیٹرنگ ،ٹینٹ سروس ،ہوٹلز ،موٹلزکی سروسز کی فراہمی پر عائد کردہ پابندی کوخلاف قانون قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا ہے۔اس ضمن میں آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اجمل بلوچ نے کہا کہ حکومت کو غلط مشورے دینے والے حکومت کے خیرخواہ نہیں ہیں۔ کوئی ادارہ کیسے کسی تاجر کو کاروبار کرنے سے منع کرسکتا ہے قانون کسی کو اس بات کی اجازت نہیں دیتا ہے۔
آل پاکستان انجمن تاجران اس پابندی کو مسترد کر تی ہے، تاجروں کے خلاف کاروائی کی ہدایات خلا ف قانون اقدام ہوگا جس کے خلاف شدید ردعمل آئے گا ،حکومت کو ایسے اقدامات کا نوٹس لینا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *