ایمنسٹی انٹرنیشنل نے لاہورمیں اسموگ کی صورتحال کوانتہائی خطرناک قراردے دیا

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے لاہورمیں اسموگ سے نمٹنے کے لیے پاکستان سے فوری ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔
ایمنسٹی انٹرنیشنل نے پاکستانی حکومت سے لاہورشہرمیں اسموگ سے نمٹنے کے لیے فوری ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ عالمی تنظیم نے کہا کہ اسموگ پرقابو پانے کے حکومتی ناکافی اقدامات پرتشویش ہے جس سے لاہورکے ہر شہری کو خطرہ ہے۔
ایمنسٹی انٹرنیشنل کے مطابق یہ معاملہ اس قدرسنجیدہ ہے کہ ہم دنیا بھرمیں اپنے اراکین سے درخواست کررہے ہیں کہ وہ پاکستانی حکام سے کہیں کہ وہ اس بحران کی نوعیت کوسنگین مانے اورلوگوں کی صحت اورجانیں بچانے کے لیے فوری اقدامات کریں۔
واضح رہے سردیوں کے آغاز پر اسموگ کا روگ مستقل صورت اختیار کر گیا۔ا سموگ کے ساتھ دھند کے اشتراک نے صورت حال کو مزید ابتر بنا دیا ہے۔ صورت حال میں بہتری کے لیے نظریں بارش پر ہی جم ہوئی ہیں۔اسموگ شروع ہونے کے بعد سے کئی ایک مواقع پر لاہور آلودگی کے حوالے سے دنیا بھر میں پہلے اور دوسرے نمبروں پر بھی براجمان رہا ہے۔ اِس دوران شہر کے بعض علاقوں کا ائیرکوالٹی انڈیکس 600 مائیکرو گرام فی کیوبک میٹر سے بھی تجاوز کر گیا۔ تاحال اسموگ کی صورت حال کافی ابتر دکھائی دے رہی ہے اگرچہ حکام کی طرف سے مسلسل اقدامات اُٹھانے کے دعوے بھی کیے جا رہے ہیں۔اسموگ کے حوالے سے صورت حال میں بہتری کے لیے اب تمام نظریں آسمان پر جمی ہوئی ہیں کیوں کہ صرف بارش ہونے سے صورت حال میں بہتری آسکتی ہے۔ اِس حوالے سے محکمہ موسمیات کے پاس بھی فی الحال کوئی خوشخبری نہیں ہے۔
ماہرین ماحولیات کے مطابق ہرسال اسموگ کی شدت میں اضافہ درختوں کی بے دریغ کٹائی کا نتیجہ بھی ہے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *