برطانیہ، کورونا کے علاج کیلئے انسانوں پر نئی ویکسین کا ٹرائل شروع

نئی ویکسین کے تجربےکے لیے رضاکاروں کو امیونائز کیا جا رہا ہے

لندن: (پاکستان فوکس آن لائن)برطانیہ میں کورونا وائرس کےعلاج کے لیے انسانوں پر نئی ویکسین کا ٹرائل شروع کر دیا گیا ہے۔نئی ویکسین کے تجربےکے لیے رضاکاروں کو امیونائز کیا جا رہا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق برطانیہ میں کورونا وائرس کی نئی ویکسین کا انسانی ٹرائل شروع کر دیا گیا، اگلے چند ہفتوں میں کم از کم 300 افراد کو ویکسین دی جائے گی۔
امپیریل کالج لندن میں جانوروں پہ کیے گئے تجربات سے پتہ چلا ہے کہ یہ ویکسین محفوظ ہے، یہ روایتی ویکسین سے مختلف ہے۔ دنیا بھر میں اس وقت 120 سے زیادہ کورونا وائرس کی ویکسین پر کام ہو رہا ہے۔ ان میں سے 13 کلینیکل ٹرائل کے سٹیج تک پہنچ چکی ہیں۔ویکسین بنانے والی ٹیمیں کہتی ہیں کہ وہ ایک دوسرے کے خلاف دوڑ میں شامل نہیں ہیں، بلکہ وائرس کے خلاف ہیں۔ امریکہ کی جانب سے بنائی گئی ویکسین سے متعلق کہا جا رہا ہے کہ اس کے تیسرے مرحلے کے تجربات کا آغاز اگلے ماہ کیا جائے گا جس کے بعد متعلقہ اتھارٹی سے منظوری ملنے کے بعد مارکیٹ میں لانچ کرنے کا مرحلہ آئے گا۔رپورٹ کے مطابق امریکہ میں ویکسین تیار کرنے والی کمپنی کا کہنا ہے کہ ایک سال کے دوران ویکیسن کی ایک ارب تک پراڈکٹ تیار کرنے کی کوشش کی جائے گی تاہم یہ اس بات پر منحصر ہے کہ یہ ویکسین انسانوں کیلئے 100 فیصد فائدہ مند ثابت ہو جائے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ چین میں بھی ویکسین تیار کی جا رہی ہے جس پر تیزی سے پیش رفت جاری ہے۔
دوسری جانب معروف امریکی ڈاکٹر فاوچی نے امید ظاہر کی ہے کہ رواں سال کے آخر تک کورونا وائرس کی ویکسین تیار ہو جائے گی۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکہ میں کورونا ٹاسک فورس کے اہم رکن و ڈائریکٹر آف دی نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ایلرجی اینڈ انفیکشیئس ڈیزیزز امریکی ڈاکٹر اینتھونی فاؤچی نےکانگریس کے سامنے کورونا وائرس کے حوالے سے اپنا بیان ریکارڈ کراتے ہوئےکہا ہے کہ وہ بڑے محتاط ہو کر امید کرتے ہیں کہ 2020 کے آخر تک ویکسین تیار ہو جائے گی۔انہوں نے بتایا کہ ادویات کی کمپنی ماڈرنا کا جولائی 2020 کے آغاز تک کلینیکل ٹرائل کے تیسرے دور کو لانچ کرنے کا منصوبہ ہے۔ لیکن اس میں کچھ وقت لگ سکتا ہے۔ان کا کہنا تھا کورونا ویکسین کی افادیت جانچنے کے لئے ویکسین کی ایک چھوٹی سی خوراک تقریبا 30،000 افراد کو دی جائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *