ڈاکٹرزنے کورونا وائرس کے علاج میں ابتدائی کامیابی حاصل کرلی

کرونا وائرس کے علاج میں ابتدائی کامیابی، مثبت نتائج ملنا شروع، ڈاکٹرز پرامید

بنکاک: (پاکستان فوکس آن لائن)تھائی لینڈ میں ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے متاثرہ شدید بیمار افراد کے علاج میں نزلے اور ایچ آئی وی کے مرض کی ادویات ملا کر استعمال کرنے سے ابتدائی کامیابی حاصل ہوئی ہے اور یہ دوا دیے جانے کے 48 گھنٹے بعد بہت حوصلہ افزا نتائج حاصل ہو رہے ہیں۔
برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی میں چھپنے والی خبر کے مطابق اس دوائی کو ایچ آئی وی اور نزلے میں استعمال ہونے والی ادویات کو اکھٹا کرکے تیار کیا گیا ہے۔اس دوا کو کرونا وائرس سے شدید متاثر افراد کے علاج کیلئے ٹیسٹ کیا گیا تو 48 گھنٹوں کے اندر بہت ہی حوصلہ افزا نتائج برآمد ہوئے۔ اس نی دوائی کو بنکاک کے ہسپتال میں زیر علاج مریضوں پر استعمال کیا جا رہا ہے۔
راجہوتھی ہسپتال کے ڈاکٹروں نے بتایا کہ چینی صوبے ووہان کی رہائشی ضعیف خاتون سمیت کرونا وائرس سے متاثرہ دیگر افراد پر یہ نیا طریقہ علاج اختیار کیا گیا ہے۔ڈاکٹروں نے تصدیق کی ہے کہ جن مریضوں پر اس دوائی کا ٹیسٹ کیا گیا ان کے دس دن پہلے کرونا وائرس مثبت آیا تھا۔ تاہم اس دوائی کے استعمال کے صرف 48 گھنٹوں بعد ان میں کرونا وائرس نہیں پایا گیا۔ ان کا کہنا ہے کہ بظاہر یہ طریقہ علاج کارگر ثابت ہو رہا ہے لیکن اسے کرونا وائرس کے سدباب کیلئے اس پر مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔
ادھر خبریں ہیں کہ چین میں بھی کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کو نزلے اور ایچ آئی وی کی ادویات ملا کر دی جا رہی ہیں جس سے ان کی حالت بہتر ہو رہی ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق تھائی لینڈ کے 19 شہریوں میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی تھی۔ کہا جا رہا ہے کہ ان میں 8 افراد صحتیاب ہسپتالوں سے ڈسچارج ہو چکے ہیں جبکہ 11 کا اب بھی علاج جاری ہے۔ ابتدائی طور پر صرف شدید متاثرہ لوگوں کو ہی یہ دوا استعمال کروائی جا رہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *