جعلی اکاؤنٹس کے بعد اب بیوہ خاتون کا کروڑوں روپے مالیت کا پلاٹ سامنے آگیا

غریب بیوہ کروڑوں کی جائیداد رکھنے کے الزام میں نیب میں طلب

کراچی: (پاکستان فوکس آن لائن) بے نامی اکاؤنٹس کے بعد اب ایک خاتون کی کروڑوں روپے مالیت کی بے نامی جائیداد کا انکشاف ہوا ہے۔ آئے روز کسی نہ کسی غریب فرد کے نام بنے جعلی اکاؤنٹ سے اربوں روپے کی منتقلی کا انکشاف ہوتا ہے رہتا ہے، جعلی بینک اکاؤنٹس کی وبا ابھی رکی نہیں کہ اب کراچی میں بے نامی جائیداد کا بھی انکشاف ہوا ہے، اور اس حوالے سے نیب کمبائن انوسٹی گیشن ٹیم نے شاہ فیصل کالونی کی رہاشی بیوہ خاتون کو نوٹس بھیج دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آپ کا کراچی کے پوش علاقے میں کروڑوں روپے مالیت کا پلاٹ ہے، جس کی تحقیقات کے لئے اسلام آباد طلب کیا گیا ہے۔
میڈیارپورٹس کےمطابق نیب نے شاہ فیصل کالونی نمبر تین کے مکان کی مالکن کے نام ایک نوٹس بھیجا ہے جس میں ان سے گلشن اقبال کڈنی ہل میں کروڑوں روپے کا پلاٹ خریدنے کی وجوہات پوچھی گئی ہیں۔نیب نے خاتون کو 320گز کے پلاٹ کے کاغذات لے کر فوری راولپنڈی آنے کی ہدایت کی ہے۔اس مکان کی رہائشی خاتون کا نام نگہت پروانا ہے، شوہر کے انتقال کے بعد ان کی کفالت بھائی کررہے ہیں، نیب کا نوٹس ملنے کے بعد خاتون پریشانی میں مبتلا ہوگئی ہیں۔نیب کے نوٹس میں نگہت پروانا پر الزام لگایا گیا ہے کہ انہوں نے پلاٹ جعلی اکاؤنٹ کے ذریعے خریدا اور اب وہ راولپنڈی میں تحقیقاتی افسر کے سامنے پیش ہوں۔متاثرہ خاتون کے بھائی کا کہنا ہے کہ ایسا تبھی ممکن ہے جب نیب آنے جانے کا کرایہ دے۔نگہت پروانا کی بیٹی کا بھی یہی مطالبہ ہے کہ نیب غریبوں کو پریشان کرنے کے بجائے جعلی اکاؤنٹس میں ان کا نام استعمال کرنے والوں کا سراغ لگائے۔خاتون کا کہنا ہے کہ اگر میرا کوئی پلاٹ ہوتا تو میں کراچی کی غریب بستی میں رہائش پذیر نہ ہوتی۔
دوسری جانب نیب ذرائع نے بتایا ہے کہ خاتون کے نام پرکراچی کے مہنگے علاقے میں320 گز کا پلاٹ ہے، پلاٹ کڈنی ہل پارک کی زمین پر چائنہ کٹنگ کرکے نکالا گیا اور اسے گرفتار سابق ڈی جی پارکس لیاقت قائم خانی کے دور میں الاٹ کیا گیا، پلاٹ کی موجودہ مالیت 80کروڑ سے زائد ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *