عمان کے سلطان قابوس طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے

مسقط کی جامع مسجد میں سلطنت آف عمان کے سلطان قابوس کی نماز جنازہ ادا

حیثم بن طارق نے عمان کے نئے سلطان کا حلف اٹھا لیا

مسقط: (پاکستان فوکس آن لائن) عمان کےسلطان قابوس 79برس کی عمر میں انتقال کرگئے۔تفصیلات کے مطابق سلطان قابوس طویل عرصےسےبیمارتھے اور کینسر میں مبتلا تھے۔ انہوں نے شادی نہیں کی اور ان کی کوئی اولادنہیں تھی۔
مسقط کی جامع مسجد میں سلطنت آف عمان کے سلطان قابوس کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی، ان کی جگہ حیتم بن طارق کو نیا سلطان مقرر کر دیا گیا ہے۔سلطان قابوس کی نماز جنازہ سلطان قابوس جامع مسجد میں ادا کی گئی جس میں لوگوں کی بڑی تعدا د شریک ہوئی۔ سلطان قابوس 1970 سے برسر اقتدار تھے، وہ طویل عرصے سے علیل تھے۔ سلطان کا کوئی جانشین نہیں تھا۔
عمان کے سلطان قابوس بن السعید کے انتقال کے بعد ان کے چچا زاد بھائی حیثم بن طارق السعید کو عمان کا نیا سلطان بنادیا گیا۔قطری نشریاتی ادارے الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق 65 سالہ سابق وزیر ثقافت و ورثہ نے سلطان قابوس کی وفات کے اعلان کے چند گھنٹوں بعد ہی شاہی خاندان کونسل کے سامنے اپنے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔سرکاری ٹیلیویژن کے مطابق حکام نے بغیر کسی وضاحت کے سلطان قابوس کی جانب سے جانشین نامزد کرنے کے لیے لکھا گیا خط کھولا اورحیثم بن طارق کے نئے حکمران ہونے کا اعلان کردیا۔

عمانی حکومت نے ٹوئٹر پر اعلان کیا کہ ’شاہی خاندان کونسل کے اجلاس میں اسے سلطان نامزد کرنے کا فیصلہ کیا گیا جسے سلطان نے چنا ہے جس کے بعد حیثم بن طارق نے ملک کے نئے سلطان کی حیثیت سے حلف اٹھا لیا‘۔
عمان کے نئے سلطان حیثم بن طارق کو 2013 میں سلطان قابوس نے عمان کی ترقیاتی کمیٹی کا سربراہ نامزد کیا تھا اس کے علاوہ وہ وزیر قومی ورثہ و ثقافت کے عہدے پر بھی فائز تھے۔واضح رہے کہ مشرق وسطیٰ کے سب سے طویل عرصے تک برسر اقتدار رہنے والے رہنما سلطان قابوس علالت کے باعث 79 سال کی عمر میں جمعے کی رات انتقال کر گئے تھے۔ان کی وفات پر 3 دن کے سرکاری سوگ اور 40دن تک پرچم سرنگوں رکھنے کا اعلان کیا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *