امریکی صدر نے ترکی سے پابندیاں ہٹانے کا اعلان کردیا

واشنگٹن: (پاکستان فوکس آن لائن) شام میں جنگ بندی کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترکی پر عائد پابندیاں ختم کرنے کا اعلان کردیا۔وائٹ ہاؤس میں خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ترکی پر عائد پابندیاں ختم کرنےکے لیے امریکی وزیرخزانہ کو ہدایات جاری کردی ہیں۔
ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ترک حکومت نے امریکی انتظامیہ کو شام میں آپریشن روکنے سے متعلق آگاہ کیا ہے اور یقین دلایا ہے کہ وہ شام میں مستقل طور پر جنگ بندی برقرار رکھے گا۔
ان کا کہنا ہے کہ ترکی کی یقین دہانی پر میں نے امریکی وزیرخزانہ کو ہدایت کی ہے کہ 14 اکتوبر کو ترکی پر لگائی جانے والی پابندیاں ہٹالی جائیں۔اس موقع پر امریکی صدر نے ترک صدر رجب طیب اردوان کی شام میں جنگ بندی کے حوالے سے تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ترک صدر ایک محب وطن انسان ہیں اور میرے خیال میں وہ اپنے ملک کے لیے بہترین اقدامات کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ یہ اعلان ایسے وقت سامنے آیا ہے جب گذشتہ روز ہی روس اور ترکی کی جانب سے شام میں جنگ بندی کی مدت مزید 150 گھنٹے بڑھانے پر اتفاق ہوا ہے۔اس سے قبل 17 اکتوبر کو امریکی مداخلت پر ترکی نے شمالی شام میں کردوں کیخلاف آپریشن 5 روز کیلئے معطل کیا تھا۔گذشتہ روز روس میں ہونے والی پیوٹن اور اردوان ملاقات میں طے ہوا کہ کرد ملیشیا 150 گھنٹوں میں سیف زون کو خالی کردے گی۔ترک صدر کا کہنا تھا کہ ترک اور روسی فوجی دستے شام کی سرحد میں ’سیف زون‘ کے مشرق اور مغرب کی جانب 10 کلومیٹر تک کے علاقے میں مشترکہ گشت بھی کریں گے۔
یاد رہے کہ ترکی کی جانب سے شمالی شام میں 9 اکتوبر سے کرد باغیوں کے خلاف بہارِ امن ’پیس اسپرنگ‘ کے نام سے فوجی آپریشن شروع کیا گیا تھا ۔ترکی اپنی سرحد سے متصل 32 کلو میٹر تک کے شامی علاقے کو محفوظ بنا کر ترکی میں موجود کم و بیش 20 لاکھ سے زائد شامی مہاجرین کو وہاں ٹھہرانا چاہتا ہے اور ترکی کا مطالبہ ہےکہ کرد ملیشیا شمالی شام کی 32 کلو میٹر کی حدود سے باہر چلی جائے اور یہ علاقہ ’سیف زون‘ کہلا سکے۔معلوم رہے کہ کرد ملیشیا آزاد ملک کے قیام کیلئے سرگرم ہے، عراق میں کردستان کے نام سے ایک خودمختار علاقہ کردوں کو دیا گیا ہے تاہم وہ شام اور ترکی کے کچھ علاقوں کو بھی کردستان کا حصہ بنانا چاہتے ہیں جبکہ ترکی کرد ملیشیا کو دہشت گرد قرار دیتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *