دنیا بھر میں کوروناوائرس سے 19 ہزار افراد جاں بحق 4لاکھ سے زائد متاثر

امریکا کورونا وائرس کا سب سے بڑا عالمی مرکز بن سکتا ہے، عالمی ادارہ صحت

دنیابھرمہلک وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 19 ہزار کے قریب پہنچ گئی، متاثرہ افراد کی تعداد4لاکھ 22ہزارسے تجاوز کرچکی ہے۔ جبکہ دنیا بھر میں صحت یاب ہونے والے افراد کی تعداد ایک لاکھ آٹھ ہزار سے زائد ہے۔
خبرایجنسی کے مطابق کورونا کا شکار دنیا کے مختلف ممالک کی حکومتوں کی جانب سے لاک ڈاؤن اور احتیاطی تدابیر اختیار کی جارہی ہیں، نیوزی لینڈ نے بھی نیشنل ایمرجنسی کا اعلان کردیا، ایران نے کوروناوائرس سے نمٹنے کیلئے غیرملکی امداد لینے سے انکار کردیا۔امداد کی پیشکش ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز بین الاقوامی تنظیم نے کی۔ایران میں 122سے زائد نئی ہلاکتوں کے بعد مجموعی تعداد1934ہوگئی جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد24ہزار 8سوسے زائد ہے۔امریکا میں 222نئی ہلاکتوں کے بعد مجموعی تعداد775ہوگئی۔ملک بھر میں متاثرہ افراد کی تعداد 54ہزار8سوسے تجاوز کرگئی۔
خبرایجنسی کے مطابق چین کے بعد یورپ کوروناوائرس کا گڑھ بن گیا۔اسپین میں وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں خوفناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔ ایک ہی دن میں تقریبا 7ہزار نئے کیس سامنے آئے۔اٹلی وزارت صحت کے مطابق اٹلی میں کورونا وائرس سے ایک روز میں 743افراد ہلاک جبکہ مرنیوالوں کی تعداد 6ہزار922ہوگئی ۔آکسفورڈ یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق برطانیہ کی آدھی آبادی کورونا کا شکار ہوچکی ہے۔ برطانیہ میں کورونا وسط جنوری میں پہنچا،ابتدا میں رپورٹ نہیں کیا جاسکا، تحقیق برطانیہ میں کورونا وبا سے نمٹنے میں ناکامی کئی اسپتالوں نے کینسرسرجری معطل کردی۔ برطانیہ میں کوروناوائرس سے نمٹنے کیلئے ایسٹ لندن میں 4ہزار بیڈ کا عارضی ہسپتال کھول جائے گا۔
عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی ترجمان مارگریٹ ہیرس نے گزشتہ روز فون پر ایک پریس بریفنگ کے دوران صحافی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا میں ناول کورونا وائرس کی وبا (کووِڈ 19) کے تیز رفتار پھیلاؤ کے پیشِ نظر خدشہ ہے کہ امریکا اس وبا کا اگلا سب سے بڑا عالمی مرکز (ایپی سینٹر) بن جائے گا۔واضح رہے کہ امریکا میں کورونا وائرس کا پہلا مریض 30 جنوری 2020 کو رپورٹ ہوا تھا جس کے بعد سے اب تک وہاں 54,881 افراد اس وبا سے متاثر ہوچکے ہیں جن میں 782 اموات بھی شامل ہیں جبکہ صحت یاب ہوجانے والوں کی تعداد صرف 378 ہے۔
علاوہ ازیں گزشتہ روز بھی امریکا میں کورونا وائرس کے مزید 58 مریض سامنے آئے جبکہ 4 اموات اسی وجہ سے ہوئیں۔ مارگریٹ ہیرس نے صحافیوں سے کہاکہ’’ہم امریکا میں کورونا وائرس سے متاثرین کی تعداد میں تیز رفتار اضافہ دیکھ رہے ہیں، لہٰذا یہ اس عالمی وبا کا اگلا مرکز بن سکتا ہے۔ اگرچہ ابھی ہم ایسا نہیں کہہ سکتے لیکن اس بات کا قوی امکان بہرحال موجود ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *