پاکستان جیسی وردی: شدید تنقید کے بعد بنگلادیش کی ورلڈکپ جرسی تبدیل

بنگلادیش کرکٹ بورڈ نے شائقین کی بھرپور تنقید اور دباؤ کے بعد کرکٹ ورلڈکپ کے لیے ٹیم کی منتخب کردہ جرسی تبدیل کردی۔آئی سی سی ورلڈکپ 2019 کے لیے بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کی ایک تصویر ورلڈکپ میں پہنی جانے والی جرسی میں منظر عام پر آئی جس پر بنگلا دیشی فینز نے شدید تنقید کی۔بنگلادیش کے عوام نے نکتہ اٹھایا کہ بنگلادیش کے قومی جھنڈے میں سبز رنگ کے ساتھ لال رنگ کا دائرہ بھی ہے اس لیے قومی ٹیم کی جرسی میں بھی سبز کے ساتھ لال رنگ بھی ہونا چاہیے تھا۔بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ کے صدر نجم الحسن نے پیر کے روز نئے رنگ کی جرسی ٹیم کے کپتان مشرف مرتضیٰ کو پیش کر کے اس تبدیلی کا اعلان کیا۔انہوں نے کہا کہ بورڈ ڈائرکٹرز کے ساتھ بیٹھ کر ڈیزائن کا جائزہ لیا گیا تو کسی نے سرخ رنگ کی عدم موجودگی کی نشاندہی کی جس کے بعد اسے جرسی میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔سبز رنگ کی جرسی کے انتخاب نے سوشل میڈیا پر ایک تند و تیز بحث کو جنم دیا۔ بنگلہ دیش سے تعلق رکھنے والے بعض شائقین نے اسے پاکستانی جرسی سے مماثل قرار دیا۔

اس تنقید کے جواب میں بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے صدر نے پریس کانفرنس کی اور کہا کہ کرکٹ ٹیم کی کٹ پر واضح طور پر ’بنگلہ دیش‘ لکھا ہوا ہے، اسے کس طرح پاکستانی کٹ کے ساتھ الجھایا جا سکتا ہے؟انہوں نے کہا کہ کٹ پر ٹائیگر کی تصویر اور قاومی ٹیم کا لوگو موجود ہے۔ اگر اس کے باوجود بھی کوئی اسے پاکستانی کٹ کہتا ہے تو اسے بنگلہ دیش سے نکل کر پاکستان چلے جانا چاہیئے۔تاہم کئی بنگلہ دیشی شائقین نے سبز رنگ کی جرسی پر تنقید کو بلاجواز قرار دیتے ہوئے کہا کہ فن اور کھیل کی کوئی سرحد نہیں ہوتی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *