اسرائیلی لڑکی نے اعتراف کر لیا کہ پاکستان پر کبھی قبضہ نہیں کیا جا سکتا

یروشلم: (ویب ڈیسک) اسرائیل کی ایک لڑکی نے پوری دنیا کے سامنے اعتراف کر لیا کہ دنیا کا کوئی بھی ملک پاکستان پر کبھی قبضہ نہیں کر سکتا ۔ اسرائیلی لڑکی نے اسکی وجہ بھی بتا دی، لڑکی کا کہنا ہے کہ پاکستان کی سرزمین جغرافیہ کے لحاظ سے ایسی ہے کہ اس پر کہیں پہاڑ ہیں، کہیں دریا، کہیں میدان تو کہیں گلیشئیرز اس کے علاوہ پاکستان کا بہت بڑا علاقہ صحرائی ہے۔
دنیا کی کوئی فوج ایسی نہیں جو ان تمام طرح کے علاقوں میں ایک ہی وقت میں جنگ لڑ سکے۔ اسرائیلی لڑکی نے ایک وجہ یہ بتائی کہ تمام پاکستانی جنگجو نسلوں سے ہیں، پنجابی، پٹھان، بلوچی اور سندھی سبھی کے آباوٴاجداد جنگجو لوگ تھے اور موجودہ نسلویں بھی وہی خون رکھتی ہیں۔ اُسکا مزیدکہنا تھا کہ سب پاکستانی قومی اخوت کے جذبہ میں جکڑے ہوئے ہیں ، پاکستانی قوم ملک کی خاطر لڑنے مرنے کو تیار ہے۔
کسی بھی بیرونی حملے کی صورت میں آنے والی فوج کو پاکستانی فوج کے ساتھ ساتھ بیس کروڑ پاکستانی عوام کا بھی سامنا کرنا پڑے گا کیوں کہ پاکستانی عوام اپنی فوج سے پیار کرتی ہے اور ہمیشہ فوج کے ساتھ کھڑی ہوتی ہے۔لڑکی نے مثال دیتے ہوئے بتایا کہ1948ء میں جب بھارت نے کشمیر پر قبضہ کرنے کی کوشش کی تو پختونوں نے بھارتی فوج کو کشمیر کے بڑے علاقے سے نکال بھگایا۔
اسرائیل سے تعلق رکھنے والی لڑکی نے یہ بھی اعتراف کیا کہ پاکستان کی سب سے بڑی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی بہت طاقتور اور منظم ہے جس کی مدد سے پاکستانی فوج جو کہ دنیا کی چھٹی بڑی فوج ہے کو شکست دینا ناممکن ہے اس کے علاوہ پاکستان کے پاس 100 سے زیادہ ایٹم بم موجود ہیں جن کی موجودگی میں کبھی بھی پاکستان پر قبضہ نہیں کیا جا سکتا۔ اسرائیلی لڑکی نے پاکستان کے ناقابلِ شکست ہونے کی سب سے اہم وجہ یہ بتائی کہ پاکستان کی اساس نظریہ اسلام ہے یعنی پاکستان اسلام کے نام پر بنا ہے اس لیے پوری دنیا کے مسلمانوں کو پاکستان سے جذباتی وابستگی ہے اورپاکستان کے عوام اسلام کے نام پر کسی بھی حدتک جانے کو تیار ہیں اور پاکستانی اسلام کے لیے کسی بھی طرح کے حالات میں رہ سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *