آن لائن کلاسز لینے والے تمام غیرملکی طالبعلم امریکا چھوڑ دیں، ٹرمپ انتظامیہ کا حکم

واشنگٹن: (پاکستان فوکس آن لائن)کورونا وائرس کے پیش نظر امریکا سمیت مختلف ممالک میں تعلیمی ادارے بند ہیں اور آن لائن کلاسز کے ذریعے تعلیمی سرگرمیاں شروع کی گئی ہیں۔اس صورتحال میں امریکا نے اعلان کیا ہے کہ ایسے تمام غیر ملکی طلبہ جو امریکا میں تعلیمی ویزے پر موجود ہیں اگر وہ آن لائن کلاسز لے رہے ہیں تو اپنے اپنے ملک واپس لوٹ جائیں۔
برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق امریکی ویزا حکام کا کہنا ہے کہ طلبہ کو پہلے امریکا میں ہی قیام کرنے کی اجازت دے دی گئی تھی لیکن اب اس پر نظر ثانی کرکے فیصلہ کیا گیا ہے کہ جو غیر ملکی طلبہ مکمل طور پر اپنا سیمسٹر آن لائن لے رہے ہیں وہ اپنے ملک واپس چلے جائیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صرف ان طلبہ کو رکنے کی اجازت ہوگی جو امریکا میں کسی ٹوئٹر سے ٹیوشن کلاسز لے رہے ہوں۔اس حوالے سے امریکی امیگریشن اینڈ کسٹمز انفورسمنٹ (آئی سی ای) ایجنسی کا کہنا ہے کہ اگر طلبہ قوانین پر عمل نہیں کرتے ہیں تو انہیں ملک بدری کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ آئی سی ای ایجنسی کے مطابق اس فیصلے کا اطلاق ایف -1 ویزا اور ایم -1 ویزا رکھنے والے دونوں طلبہ پر ہوگا۔
واضح رہے کہ پاکستان سمیت دنیا بھر سے تقریباً 15 لاکھ غیر ملکی طالب علم موجود ہیں جن کی غالب اکثریت وہاں کی یونیورسٹیوں میں مہنگی فیسیں ادا کرکے پڑھ رہی ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ بھی جلد از جلد تعلیمی ادارے کھولنے کے حق میں ہیں لیکن کورونا وائرس کی وبا اب تک امریکا میں قابو سے باہر ہے جس کی بناء پر ماہرین اس رائے کے خلاف ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *