پاکستان اور ملائشیا کے مابین قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ طے پا گیا

ملائیشیا اور پاکستان کے درمیان 3 اہم معاہدوں پر دستخط ہوئے، شاہ محمود

کوالالمپور: (پاکستان فوکس آن لائن) وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ ملائیشیا کے دورے پر موجود وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے بتایا ہے کہ پاکستان اور ملائیشیا کے مابین 3 معاہدے ہوئے ہیں۔ملائیشیا میں ایک خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے وزیر خارجہ نے بتایا کہ ان معاہدوں میں سب سے اہم مجرموں کی حوالگی کا معاہدہ ہے، جس کے تحت اگر دونوں ممالک کا کوئی شہری جرم کر کے ایک دوسرے کے ملک میں پناہ لے گا تو اسے حوالے کرنا ممکن ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ دوسرا سوشل پروٹیکشن کا سمجھوتہ ہے، ملائیشیا میں تقریباً 82 ہزار پاکستانی مزدور کی حیثیت سے کام کرتے ہیں جن کے پاس ماضی میں کسی قسم کا کوئی سہارا نہیں تھا کہ اگر وہ کوئی کسی حادثے میں ہلاک، معذور یا کسی بیماری کا شکار ہوجاتا تھا تو اسے انتہائی معمولی رقم دے دی جاتی تھی۔
تاہم اس معاہدے کے تحت اگر پاکستانی مزدور ہلاک ہوجائے تو اہلِ خانہ کو اس کی تنخواہ کے مطابق پینشن ملتی رہے گی، اسی طرح اگر کوئی اپنے کام کی وجہ سے معذور ہوجائے یا کسی بیماری کا شکار ہوجائے تو تاحیات ریلیف ملے گا اور یہ خاصی خطیر رقم ہوگی۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ مجھے یہ بتاتے ہوئے خوشی محسوس ہورہی ہے کہ ملائیشیا سے ترسیلات زر میں 35 فیصد اضافہ ہوا ہے اور ایک ارب 55 کروڑ ڈالر پاکستان منتقل ہوتے ہیں۔
کوالالمپور سربراہی اجلاس کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے بتایا کہ اس بارے میں بہت اچھی بات چیت ہوئی۔انہوں نے کہا کہ کوالالمپور کے حوالے سے وزیراعظم پاکستان نے اپنے موقف کو واضح کردیا ہے کہ ہمارا مقصد امہ کو تقسیم کرنا اور متوازی تنظیم قائم کرنا نہیں تھا بلکہ ہمارا مقصد اقتصادی تعاون و ترقی تھی اور یہ دیکھنا تھا کہ باہمی طور پر ہم کیسے ایک دوسرے کا سہارا بن سکتے ہیں۔
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اس مقصد کے لیے ہمارا مشترکہ ٹیلیویژن کا منصوبہ زیر التوا ہے جس پر آگے بڑھیں گے جبکہ وزیراعظم نے پریس کانفرنس میں اس حوالے سے سارے ابہام دور کردیے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *