آزادی مارچ،حکومت اپوزیشن اپنے اپنے موقف پر قائم، ڈیڈلاک برقرار

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) آزادی مارچ کے پرامن خاتمے کے لیے گزشتہ 2 روز میں مولانا فضل الرحمان سے مسلم لیگ (ق) کے رہنما پرویز الہٰی کی تیسری ملاقات ہوئی ہے۔مسلم لیگ (ق) کے رہنما چوہدری پرویز الہٰی مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کے لیے ان کی رہائش گاہ پہنچے جہاں آزادی مارچ کے خاتمے سے متعلق معاملے پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ دھرنے کا مستقبل کیا ہوگا؟ عوام کو حتمی فیصلے کا انتظار ہے۔مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کے بعد واپسی پر میڈیا نمائندوں سے مختصر گفتگو میں چودھری پرویز الہیٰ کا کہنا تھا کہ مذاکرات میں مثبت پیشرفت جاری ہے، مختلف تجاویز بھی زیر غور ہیں۔
چودھری پرویز الہیٰ کا کہنا تھا کہ کئی چیزیں ساتھ ساتھ چل رہی ہیں، تھوڑا صبر اور محنت کی ضرورت ہے۔ محنت اس لیے ہو رہی ہے تا کہ مثبت طریقے سے معاملہ منطقی انجام کو پہنچے۔ ہمارے مقصد کو کامیابی ملے گی لیکن ٹائم لگے گا۔خیال رہے کہ گزشتہ روز بھی حکومتی مذاکراتی ٹیم اور اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کے درمیان ہونے والے مذاکرات بغیر کسی نتیجے کے ختم ہوگئے تھے۔
مذاکرات کے بعد مختصر پریس کانفرنس کرتے ہوئے پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ ڈیڈلاک ختم کرنے تک مذاکرات جاری رہیں گے۔ رہبر کمیٹی جب اپنے لیڈرز سے بات کرے گی، ہم مذاکرات پر تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کئی چیزوں پر اتفاق ہو چکا ہے، درمیانی راستہ ڈھونڈنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ کئی مطالبات پر رضامندی ہو گئی ہے۔
اس موقع پر اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کے سربراہ اکرم درانی نے واضح موقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے موقف پر ڈٹے ہوئے ہیں۔ رہبر کمیٹی کا وہی مطالبہ ہے جو پہلے تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *