آغا سراج کے گھر چھاپہ: چیئرمین نیب تحقیقات کریں ورنہ ہم ایکشن لیں گے،بلاول بھٹو

کراچی:(پاکستان فوکس آن لائن ) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ چیئرمین نیب کو خاموشی کے بجائے اپنے افسران کیخلاف ایکشن لینا چاہیے، اگر وہ ایکشن نہیں لیں گے تو پھر ہمیں لینا پڑے گا۔سندھ اسمبلی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پتا نہیں ہر بار انہیں شوق ہے کہ راولپنڈی میں ٹرائل ہو۔ مقدمہ سندھ اور بینک اکاؤنٹ سندھ کے لیکن کیس پنڈی شفٹ کیا جا رہا ہے، راولپنڈی میں ایسا کیا ہے؟بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ چھ ماہ سے ہماری کردار کشی کی جا رہی ہے۔ آرٹیکل 10 اے کے مطابق فری ٹرائل ہمارا حق ہے۔ جمہوریت میں ایسے تو نظام نہیں چل سکتا۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے الزام عائد کیا کہ افسوس ناک بات ہے کچھ ادارے پولٹیکل انجینئرنگ کر رہے ہیں۔ جانتا ہوں نیب کا قانون کالا قانون ہے۔ نیب میں اصلاحات نہ لانا پیپلز پارٹی کی بھی ناکامی ہے۔ افسوس سے کہنا پڑتا ہے چیئرمین نیب نے آج تک ایکشن نہیں لیا۔ چیئرمین نیب کو خاموشی کے بجائے اپنے افسران کیخلاف ایکشن لینا چاہیے۔ اگر چیئرمین نیب ایکشن نہیں لیں گے تو پھر ہمیں لینا پڑے گا۔انہوں نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغاز اور ان کی گرفتاری کیخلاف بات کرتے ہوئے کہا کہ آغا سراج درانی پر لگائے گئے الزامات کی مذمت کرتا ہوں۔ انھیں گرفتار کرنے کے بعد ثبوت اکٹھے کیے گئے۔ اگر کوئی ثبوت ہوتا تو ان کی گرفتاری کے بعد کیوں چھاپا مارا گیا؟ چادر اور چار دیواری کو پامال کیا گیا۔ خواتین اور بچوں کو یرغمال بنا کر بدتمیزی کی گئی۔ان کا کہنا تھا کہ آمدنی سے زائد اثاثوں کا الزام کسی پر بھی لگ سکتا ہے۔ آمدن سے زائد اثاثوں کا الزام ایسا ہی ہے جیسے پولیس کسی کی جیب میں چرس ڈال دے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *