‘پیپلز پارٹی کے دور میں 4 وزیر خزانہ تبدیل ہوئے، کیا وہ ناکامی نہیں؟اسدعمر

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن)سابق وزیر خزانہ اسد عمر وزارت خزانہ سے مستعفی ہونے کے بعد پہلی بار ایوان میں آئے تو حکومتی ارکان نے ڈیسک بجاکر ان کا استقبال کیا۔پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے دورِ اقتدار میں 4 مرتبہ وزیرخزانہ کی تبدیلی پر آصف زرداری کی حکومتی پالیسیوں کو ناکام ترین قرار دے دیا۔قومی اسمبلی میں اسپیکر اسد قیصر کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس کے دوران سابق وزیرِ خزانہ اسد عمر نے وزارت چھوڑنے کے بعد پہلی مرتبہ خطاب کیا۔اپنے خطاب کے دوران اسد عمر نے ایوان میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی جانب سے کی جانے والی تنقید پر جوابی وار کیا۔اسد عمر کا کہنا تھا کہ بلال بھٹو زرداری نے پی ٹی آئی کی حکومت کو وزیر خزانہ کی تبدیلی پر ایک ناکام حکومت قرار دیا تھا، لیکن پیپلز پارٹی کے دورِ حکومت میں 4 مرتبہ وزیرخزانہ تبدیل ہوئے تو کیا وہ اہل حکومت تھی یا ناکام ترین حکومت تھی؟
اسدعمر کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کی حکومت کو آج یہ ساری باتیں اس لیے سننے کے لیے مل رہی ہیں کیونکہ گزشتہ حکومت کے دوران لوٹی گئی دولت پر گھیرا تنگ ہورہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حالات میں موجود انہیں پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، عوام کے ٹیکس کا پیسہ استعمال کرنے والوں کی جائیدادیں خطے میں ہیں اور اسی وجہ سے دونوں کے گٹھ جوڑ کی آوازیں سنائی دے رہی ہیں۔اسد عمر نے کہا کہ عوام کے ساتھ سچ بولیں، ماضی میں مشکل فیصلے کیے ہیں اور اب بھی مشکل فیصلے کرنے ہیں۔اسد عمرنے کہا کہ جب عوام کو نظر آئے گا کہ نیک نیتی سے کیے جارہے ہیں، انہیں نظر آئے گا کہ بہتری کا سفر شروع ہورہا ہے تو وہ مشکل بھی برداشت کرنے کے لیے تیار ہیں۔
انہوں نے اپنی حکومت کو پاکستان پیپلز پارٹی کے 2008 سے 2013 تک رہنے والی حکومت سے موازنہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت کی معاشی ترقی کی رفتار پر تنقید کی جارہی ہے لیکن آصف زرداری کی حکومت کے پہلے سال میں معاشی ترقی کی شرح 0.4 فیصد تھی۔اسد عمر کا کہنا تھا کہ کسی نے بلاول بھٹو زرداری کو یہ نہیں بتایا کہ پیپلز پارٹی کی حکومت میں معاشی ترقی کی شرح پانچ سال تک مجموعی طور پر 2.8 فیصد رہی تھی۔سابق وزیرخزانہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کے ابتدائی 8 ماہ کے دوران افراطِ زر 6.8 فیصد ہے یہ اس سے بھی زیادہ ہوسکتی تھی لیکن پیپلز پارٹی کے پانچ سالہ اقتدا میں اوسط مہنگائی کی شرح 12.3 فیصد تھی۔بجٹ کے خسارے پر بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ان کی حکومت کے دوران بجٹ کے خسارے پر بات کی جارہی ہے کہ یہ بڑھ رہا ہے جو واقعی زیادہ ہے، لیکن پیپلز پارٹی کی گزشتہ حکومت کے دوران 5 سال کے دوران اوسط 7 فیصد تک رہا۔
ملکی قرضوں پر اسد عمر نے کہا کہ پاکستان کے قرضے نہیں بڑھنے چاہیئں، موجودہ حکومت کے دوران سب سے سست روی کے ساتھ قرضے بڑھ رہے ہیں، لیکن پیپلز پارٹی کی حکومت کے دوران ملکی قرضے دگنے ہوئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *