اسٹاک مارکیٹ میںزبردست تیزی انویسٹرز کو90ارب کافائدہ

کراچی: (پاکستان فوکس آن لائن)پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں رواں سال کے پہلے دن اور رواں ہفتے کے تیسرے کاروباری روز زبردست تیزی کے باعث 41 ہزار کی نفسیاتی حد ایک مرتبہ پھر بحال ہو گئی۔ آج ہونے والی تیزی کے باعث حصص کی مالیت میں 90 ارب روپے سے زائد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
تفصیلات کے مطابق پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں رواں سال کے پہلے کاروباری روز اور رواں ہفتے کے تیسرے کاروباری روز کے زبردست تیزی کے باعث عوام کو نئے سال کا تحفہ مل گیا، پہلے روز شاندار تیزی کے باعث حصص مارکیٹ میں 664.92 پوائنٹس کی تیزی دیکھی گئی، تیزی کے باعث مارکیٹ میں مزید 7حدیں بحال ہو گئیں۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز کاروباری ہفتے کے دوسرے روز اور 2019ء کے آخری کاروباری روز میں پاکستان اسٹاک مارکیٹ کا 100 انڈیکس 152.55 پوائنٹس کی مندی دیکھی گئی تھی جس کے باعث انڈیکس 40735 پوائنٹس پر بند ہوا تھا مندی کے باعث 24 ارب 26 کروڑ روپے کا نقصان ہوا تھا۔
آج کاروبار کا آغاز ہی مثبت انداز میں ہوا۔ پہلے ایک گھنٹے کے دوران دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی کے بعد دوسرے گھنٹے کے دوران پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں تیزی آی اور انڈیکس 40907.73 پوائنٹس کی سطح عبور کر گیا تھا۔
اسی کا تسلسل دوپہر 12 بجے تک جاری رہا اور 100 انڈیکس 41 ہزار کی نفسیاتی حد عبور کر گیا تھا، دوپہر تین بجے 100انڈیکس نے ایک مرتبہ پھر لمبی چھلانگ لگائی اور انڈیکس 41300 کی حد عبور کر گیا۔ایک موقع پر پاکستان اسٹاک مارکیٹ کا انڈیکس 41500 کی حد بھی عبور کر گیا تھا، تاہم چند سیاسی معاملات کے باعث اس کا اختتام 664.92 پوائنٹس کی تیزی کے بعد ہوا اور انڈیکس 41400 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ کر بند ہوا، پورے کاروباری روز کاروبار میں 1.61 فیصد بہتری دیکھی گئی۔رواں ہفتے کے تیسرے کاروباری روز کے دوران پاکستان سٹاک مارکیٹ کے دوران 23 کروڑ80 لاکھ 26 ہزار سے زائد شیئرز کا کاروبار ہوا جس کی مالیت 6 ارب 22 کروڑ 77 لاکھ 41 ہزار سے زائد رہا۔ آج ہونے والی تیزی کے باعث حصص کی مالیت میں 90 ارب روپے سے زائد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
معاشی ماہرین کے مطابق نئے سال کے آغاز میں مختلف مالیاتی اداروں کی جانب سے اسٹاک مارکیٹ میں حصص کی خریداری ہوئی، جبکہ نیب قوانین میں ترمیم کے حوالے سے آنے والی خبروں کے باعث بھی سرمایہ کاروں نے سٹاک مارکیٹ میں شیئرز کی خریداری مِیں دلچسپی لی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *