مقبوضہ کشمیر کے ڈھانچے میں تبدیلی کی ایک اور مذموم کوشش

پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کے بھارتی اقدام مسترد کردیے

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کے ڈھانچے کو غیر قانونی طور پر تبدیل کرنے کی مسلسل بھارتی کوششوں کی شدید مذمت کر دی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ بھارت کی جانب سے ڈومیسائل قوانین میں تبدیلی ایک اور غیر قانونی اقدام ہے، جو بین الاقوامی قوانین کی واضح خلاف ورزی ہے، پاکستان اس کی شدید مذمت کرتا ہے۔ترجمان کا کہنا تھا کہ یہ اقدام 5 اگست 2019 کے اقدامات کا تسلسل ہے، مقبوضہ کشمیر کے عوام نے نئے قانون کو ناقابل قبول قرار دے کر مسترد کر دیا ہے، کشمیری عوام اپنے بنیادی حقوق، آبادی اور الگ شناخت کو تبدیل کرنے کی کوششوں کو قبول نہیں کریں گے۔انھوں نے کہا کہ عالمی سطح پر صحت کے بحران کی صورت حال میں بھارت نے تازہ ترین کارروائی کی ہے جو قابل مذمت ہے، بی جے پی ہندوتوا ایجنڈے کو آگے بڑھانا چاہتی ہے، اقوام متحدہ اور بین الاقوامی برادری کو بھارت کی نئی کارروائی کا نوٹس لینا چاہیے، اور مسلسل خلاف ورزیوں پر بھارت سے جواب طلب کرنا چاہیے۔
ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کو اجاگر کرتا رہے گا، پاکستان کا مؤقف ہے کہ بھارت کبھی بھی کشمیری عوام کی مرضی کو نہیں توڑ سکے گا۔
خیال رہے کہ 5 اگست 2019 کو بھارت نے جموں و کشمیر کی خصوصی اور الگ حیثیت کا خاتمہ کرکے اسے بھارت کا غیر قانونی طور پر حصہ بنا لیا تھا، جس کی مذمت ساری دنیا میں کی گئی، تب سے اب تک مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن ہے اور مظلوم کشمیریوں پر بد ترین مظالم ڈھائے جا رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *