کوروناکاعلاج،کراچی کے نجی ہسپتال نے 10 دن کے علاج کا بل 17 لاکھ روپے بنادیا

فخر عالم نجی اسپتالوں میں کورونا مریضوں سے زائد رقم کی وصولی پربرہم

کراچی: (پاکستان فوکس آن لائن)کرونا کے علاج کے نام پر کھلی لوٹ مار، کراچی کے نجی ہسپتال نے مریض کا 17 لاکھ روپے کا بل بنا دیا، مریض صرف 10 دن کیلئے ہسپتال میں زیر علاج رہا، ہسپتال انتظامیہ نے 1800 لیٹکس گلوز، سینکڑوں پی پی ایز اور این 95 ماسک مریض کے کھاتے میں ڈال دیے۔ تفصیلات کے مطابق کچھ روز سے میڈیا پر آوازیں بلند کی جا رہی ہیں کہ کئی نجی ہسپتال کرونا مریضوں کے علاج کے نام پر لاکھوں روپے کی لوٹ مار کر رہے ہیں۔اس حوالے سے معروف اداکار و گلوکار فخر عالم کی جانب سے سوشل میڈیا پر کی گئی ایک پوسٹ میں ایک کیس کی تفصیلات سامنے لائے ہیں جس کے مطابق کراچی کے ایک نجی ہسپتال نے کرونا مریض سے چند دن کے علاج کے عوض لاکھوں روپے بٹورے۔
بتایا گیا ہے کہ کراچی کے ایک مشہور نجی ہسپتال نے ایک کرونا مریض سے علاج کے عوض 17 لاکھ روپے سے زائد کا بل وصول کیا۔کرونا مریض ہسپتال میں 10 روز تک زیر علاج رہا۔ اس دوران اس مریض کو دیگر مریضوں جیسا ہی علاج فراہم کیا گیا، تاہم ڈسچارج ہوتے وقت اس کے ہاتھ میں 17 لاکھ روپے سے زائد کا بل تھما دیا گیا۔ بل کی تفصیلات میں ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے حیران کن تفصیلات شامل کی گئیں۔ کل 1800 لیٹکس گلوز، سینکڑوں پی پی ایز اور این 95 ماسک مریض کے کھاتے میں ڈال دیے گئے۔یعنی روزانہ کی بنیاد پر مریض کے کھاتے میں 180 لیٹکس گلوز اور درجنوں ماسک اور پی پی ایز ڈالی گئیں۔ اس حوالے سے مریض کا کہنا ہے کہ اسے جسے وارڈ میں رکھا گیا تھا، وہاں کل 12 مریض تھے۔ ڈاکٹراور دیگر طبی عملہ خاص طور پر کسی ایک مریض کو دیکھنے کی بجائے ہمیشہ ایک ہی وزٹ کے دوران تمام ہی مریضوں کا معائنہ کرتے تھے۔ جبکہ ان کے گلوز، پی پی ایز اور ماسک کی تبدیلی بھی نہیں کی جاتی تھی۔
یہ معاملہ سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا پر لوگ سراپا احتجاج ہیں۔ یہ معاملے سامنے لانے والے فخر عالم اور دیگر لوگوں کا موقف ہے کہ وہ یہ بات سمجھتے ہیں کہ نجی ہسپتال پیسہ کماتے ہیں، وہ ایسا کر سکتے ہیں، لیکن جب حالات ٹھیک نہ ہوں تو مریضوں کے کھاتے میں اتنے بڑے بل ڈالا دینا سوائے بدترین لوٹ مار کے اور کچھ نہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *