آزادیٔ اظہارِ رائے پر قدغن نہيں ہونا چاہئے، بلاول بھٹو کی پی ٹی ایم رہنماؤں سے ملاقات

کل خبردارکیا،آج پیپلزپارٹی کی قیادت نے پی ٹی ایم کے ساتھ بیٹھک لگالی

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت سے پشتون تحفظ موومنٹ کے وفد نے ملاقات کی، جس میں چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری، سابق صدر آصف زرداری، سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، فرحت اللہ بابر جبکہ محسن داوڑ، گلالئی اسماعیل اور دیگر شامل تھے۔بلاول بھٹو زرداری نے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت اور انسانی حقوق پر پی ٹی ایم کے مطالبات کی حمایت کرتے ہیں، ملک میں آزادیٔ اظہارِ رائے پر قدغن نہیں ہونا چاہئے۔صحافی کے سوال پر کہ پی ٹی ایم کے رہنماؤں سے ملاقات میں کیا بات ہوئی؟، پر جواب دیتے ہوئے بلاول کا کہنا تھا کہ ارکان پارلیمنٹ سے ملاقات کی ہے، سیاسی لوگ ملتے ہیں تو سیاست پر ہی بات کرتے ہیں، جمہوریت پر بات ہوگی جو ملک کیلئے ہی ہوگی۔
گزشتہ روز ڈی جی آئی ایس پی آر نے پریس کانفرنس میں ڈھکے چھپے الفاظ میں پیپلزپارٹی کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا، ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی ایم راؤ انوار کیخلاف احتجاج کرتی ہے جبکہ ایک جماعت پی ٹی ایم کی حمایت کررہی ہے، ساتھ ہی راؤ انوار کو اپنا بچہ بھی کہتی ہے۔چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ عمران خان ڈی جی آئی ایس پی آر سے سیاسی بیانات نہ دلوائیں، ایسے بیانات ادارے کو متنازع بنائیں گے۔آصف علی زرداری نے پی ٹی ایم رہنماؤں سے ملاقات کے بعد کہا کہ پشتون تحفظ موومنٹ کے مطالبات جائز ہیں، قبائلی علاقوں میں بہت خون بہہ چکا ہے، انہیں قومی دھارے میں لانا جمہوریت کا کام ہے۔صحافی نے سوال کیا کہ ریاست کہہ رہی ہے کہ ان کی گیم اب ختم ہو گئی ہے، جس پر سابق صدر نے جواب دیا کہ کسی کی گیم کبھی ختم نہیں ہوتی، ہمیں چاہئے کہ ان کے ساتھ بیٹھ کر بات چیت کریں۔

 

ڈی جی آئی ایس پی آر کی پریس کانفرنس کے اگلے ہی روز آصف زرداری اور بلاول زرداری کی PTM سے ملاقات – کیا دونوں نے فوج کو اشتعال دلانے کی کوشش کی ہے ؟ سنیے ڈاکٹر شاہد مسعود کا تبصرہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *