دنیا کو بہتر بنانے کے لیے کوشاں 5 مسلم خواتین میں مہوش حیات بھی شامل

مشرقی خواتین کی کاوشوں اور اسلامی نقطہ نظر کی ترویج کرنے والے عالمی میگزین ’دی مسلم وائب‘ نے اداکارہ مہوش حیات کو مشرقی دنیا کی ان 5 خواتین میں سے ایک قرار دیا ہے جو دنیا کو بہتر بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔’دی مسلم وائب‘ کی جانب سے 26 اگست کو ’خواتین کے برابری کے عالمی دن‘ کے موقع پر اپنے ایک مضمون میں اعتراف کیا کہ مہوش حیات کا شمار مشرقی دنیا کی ان 5 خواتین میں ہوتا ہے جو دنیا کو بہتر بنانے کے لیے خدمات دے رہی ہیں۔
میگزین نے برطانیہ کے فلاحی ادارے ’پینی اپیل‘ کے تعاون سے جاری کردہ فہرست میں مہوش حیات کے علاوہ امریکا کی مسلم صومالی نژاد رکن پارلیمنٹ الحان عمر کو بھی شامل کیا ہے۔
مضمون میں مجموعی طور پر صرف 5 خواتین کی کاوشوں کا ذکر کیا گیا ہے اور انہیں مشرقی دنیا میں خواتین اور خصوصی طور پر بچیوں کی صحت اور تعلیم سے متعلق اہم کردار کرنے والی شخصیات کے طور پر پیش کیا ہے۔پانچ خواتین کی فہرست میں مہوش حیات اور الحان عمر کے علاوہ مصر کی ایتھلیٹ منال رستم، فلسطینی نژاد امریکی سیاسی رہنما لندا سارسور اور افریقی نژاد امریکی ایتھلیٹ ابتہاج محمد کو شامل کیا گیا ہے۔یہ پانچوں خواتین کسی نہ کسی طرح سماجی تنظیم ’پینی اپیل‘ یا کسی اور فلاحی ادارے کے ساتھ مل کر مسلمان خواتین اور خاص طور پر بچیوں کی بہتری کے لیے کوشاں ہیں۔

خیال رہے کہ مہوش حیات کو حال ہی میں ’پینی اپیل‘ نے اپنا خیر سگالی سفیر مقرر کیا تھا اور وہ اسی تنظیم کے لیے آئندہ برس لندن میں ہونے والی میراتھن ریس میں دوڑیں گی۔اسی میراتھن ریس سے ہونے والی آمدنی کو پینی اپیل تنظیم پاکستان کے صوبہ سندھ کے تیسرے بڑے شہر سکھر میں بچیوں کے 5 اسکول تعمیر کرنے پر خرچ کرے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *