ایرانی صدر کے بھائی کو کرپشن کیس میں 5 سال قید کی سزا

تہران: (پاکستان فوکس آن لائن)ایرانی عدالت نے ملک کے صدر حسن روحانی کے سابق نمائندہ خصوصی اور بھائی کو کرپشن کیس میں 5 سال قید کی سزا سنادی۔عدالت نے حسن روحانی کے بھائی حسین فریدون کو کرپشن کیس میں جیل بھیج دیا۔
بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ایران کے صدر حسن روحانی کے بھائی حسین فریدون کو کرپشن سمیت مختلف مقدمات کا سامنا ہے۔ کرپشن سے متعلق ایک کیس میں شواہد اور گواہوں کی روشنی میں عدالت نے صدر کے بھائی کو 5 سال قید کی سزا سنائی ہے۔قبل ازیں جولائی 2017 کو حسین فریدون کو کرپشن الزامات پر حراست میں لیا گیا تھا تاہم 2 دن بعد انہیں رہا کردیا گیا تھا جس کے لیے انہوں نے مبینہ طور پر 15.3 ملین امریکی ڈالر ادا کیے تھے بعد ازاں رواں برس مئی میں بھی حسین فریدون کو غیر متعین جیل میں قید کردیا گیا تھا۔
حسین فریدون صدر حسن روحانی کے خصوصی معاون بھی ہیں اور انہیں سیاسی طور پر ایرانی صدر کی آنکھیں اور کان بھی کہا جاتا ہے۔ حسن روحانی کے حامیوں نے فریدون کی سزا اور مقدمے کو سیاسی قرار دیتے آئے ہیں۔ بھائی کو قید کی سزا پر صدر روحانی کا تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے۔ایران کے عدالتی ترجمان غلام حسین اسماعیلی نے میڈیا کو بتایا کہ صدر روحانی کے بھائی پر کرپشن سمیت دیگر مقدمات بھی زیر سماعت ہیں، ابھی صرف ایک مقدمے میں سزا ہوئی ہے تاہم دیگر مقدمات میں بھی سزا متوقع ہے۔
سزا پانے والے حسین فریدون ایرانی صدر کے انتہائی قریب رہے ہیں اور یہ خیال بھی کیا جاتا ہے کہ ایران کی جانب سے 2015 میں مغربی ممالک سے نیوکلیئر مذاکرات میں ان کا اہم کردار رہا ہے۔بھائی کی سزا پر تاحال ایرانی صدر نے کوئی رد عمل نہیں دیا لیکن ان کے حامی ان کے بھائی کی سزا کو سیاسی قرار دے رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *