آٹا چینی بحران میں جو بھی ملوث ہوا اس کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی، وزیراعظم

مستقبل میں مصنوعی بحران سے بچنے کیلئے اصلاحات لائیں گے،فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آٹا چینی بحران میں جو بھی ملوث ہوا اس کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال پر بریفنگ دی گئی۔ کابینہ نے کچھی کینال منصوبے کی تحقیقات ایف آئی اے سے لے کر نیب کے حوالے کرنے کی منظوری دے دی۔اجلاس میں موجودہ سیاسی صورت حال، ملکی معاملات، آٹا چینی بحران کی انکوائری رپورٹ پر بھی گفتگو کی گئی۔وزیراعظم عمران خان نے حالیہ فیصلوں پر کابینہ اراکین کو اعتماد میں لیتے ہوئے کہا کہ عوام سے رپورٹس پبلک کرنے کا وعدہ پورا کردیا، 25 اپریل کو کمیشن کی رپورٹ سامنے آنے پر مزید ایکشن ہوگا، جو بھی ملوث ہوا اس کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔
معاونِ خصوصی فردوس عاشق اعوان نےکابینہ اجلاس کے بعد ميڈیا بريفنگ میں بتایا کہ عوام ميں چينی کی دستیابی کیلئے ترجیحات طے کی گئيں،وزيراعظم عمران خان 25 اپريل کو کميشن کی رپورٹ کے بعد ایکشن لیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ شہزاداکبرنےچینی بحران کی رپورٹ اجلاس میں پیش کی ہے، شوگرملوں نے اضافی ذخائر کی وجہ سے گناخریدنے سے انکار کیا، وفاق کی جانب سے چینی کی برآمد پر سبسڈی نہیں دی گئی، وزیراعظم نے کاشت کاورں کے مسائل حل کرنے کی ہدایت کی ہے۔فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ 2014سے2016کےدرمیان شوگر ملز کو سبسڈی دی گئی، گنے کی قیمت میں اضافے کا مقصد کاشتکاروں کو سہولت دینا تھا، مستقبل میں مصنوعی بحران سے بچنے کیلئے اصلاحات لائیں گے۔انھوں نے بتایا کہ انکوائری رپورٹ نے نظام کی خرابی کی نشاندہی کی ہے، حکومت خرابيوں کو دور کرکے مصنوعی بحران پيدا نہيں ہونے دے گی۔فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ وزيراعظم نے خبردار کيا ہے کہ دھمکياں دينے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا۔معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ آج کے ايجنڈے کے 2 نکات کو مؤخر اور7 کو منظور کيا گيا ہے،12ملين خاندانوں ميں ايمرجنسی امدادی رقم تقسيم کی جارہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *