سینیٹر مولابخش چانڈیو بھی کورونا وائرس کا شکار ہوگئے

سندھ کے وزیرغلام مرتضیٰ بلوچ کورونا وائرس کے باعث انتقال کرگئے

حیدرآباد: (پاکستان فوکس آن لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی ترجمان سینیٹر مولا بخش چانڈیو اور ان کے اہلخانہ کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا ہے، جس کے بعد انہوں نے خود کو گھر میں ہی آئسولیٹ کر لیا ہے۔پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات کی اہلیہ کی پانچ روز قبل طبیعت خراب ہونے پر کورونا ٹیسٹ کروائے گئے جن کی رپورٹ مثبت آنے پر مولا بخش چانڈیو، ان کے دو صاحبزادوں، دو بہوؤں اور ملازمین کے کورونا ٹیسٹ کئے گئے جن کی آج رپورٹ آ گئی ہے۔رپورٹ میں مولا بخش چانڈیو، ایک بہو اور ایک ملازم کا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔ چار افراد کے ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد چاروں افراد کو گھر میں علیحدہ علیحدہ آئسولیٹ کر دیا گیا ہے۔پیپلز پارٹی رہنما مولا بخش چانڈیو اور ان کے اہلخانہ کے ٹیسٹ مثبت آنے کی تصدیق ان کے ترجمان اور قریبی خاندانی ذرائع نے کی ہے۔دوسری جانب چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سینیٹر مولا بخش چانڈیو کو ٹیلی فون کرکے ان کی خیریت دریافت کرتے ہوئے ان کی جلد صحت یابی کیلئے دعا بھی کی۔
دوسری جانب صوبائی وزیر کچی آبادی مرتضیٰ بلوچ کرونا وائرس سے انتقال کرگئے، وہ کئی دنوں سے کراچی کے مقامی اسپتال میں زیر علاج تھے۔مرتضیٰ بلوچ کو گزشتہ دنوں کرونا وائرس میں مبتلا ہونے کے باعث نجی اسپتال میں داخل کیا گیا تھا، انہیں طبیعت بگڑ جانے کے باعث آئی سی یو منتقل کردیا گیا تھا۔ مرتضیٰ بلوچ دو مرتبہ رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے اور پیپلزپارٹی ضلع ملیر کے صدر بھی تھے۔پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور پیپلزپارٹی رہنماؤں نے غلام مرتضیٰ بلوچ کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ غلام مرتضیٰ بلوچ نے لاک ڈاؤن میں عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رکھا، وہ ہر دور میں پیپلزپارٹی کے ساتھ کھڑے رہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *