کورونا وائرس سے بچاؤ کے اقدامات، مطاف خالی کروالیا گیا

سعودی عرب،کرونا وائرس سے عمرہ زائرین کا تحفظ، طواف کی ادائیگی عارضی طور پر بند

مکہ مکرمہ: (پاکستان فوکس آن لائن)سعودی عرب نے اعلان کیا ہے کہ خانہ کعبہ اور مسجد نبوی کو نماز عشاء کے ایک گھنٹہ بعد بند کر دیا جائے گا اور ان بابرکت مقامات کو نماز فجر سے ایک گھنٹہ قبل دوبارہ کھولا جائے گا۔سعودی حکام کے مطابق یہ اقدامات کرونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر اور حفاظتی اقدامات کے سلسلے میں اٹھائے گئے ہیں۔ سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی کی جانب سے جاری ہونے والی حالیہ ٹویٹ میں بتایا گیا ہے کہ احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے مطاف اور صفا مروہ عمرہ کی بندش کے دوران بند رہیں گے۔ تاہم خانہ کعبہ میں نماز کی ادائیگی کی اجازت ہوگی۔
سوشل میڈیا پر جاری ہونے والی فوٹیجز میں دیکھا جاسکتا ہے کہ حرم شریف میں زائرین کو کورونا سے محفوظ رکھنے کو یقینی بنانے کی خاطر صفائی کی گئی اور جراثیم کش ادویات ڈالے گئے جس کی وجہ سے صحن شریف میں طواف کا عمل روک دیا گیا۔عمرہ زائرین کو بالائی منزلوں پر منتقل کرکے مطاف خالی کروالیا گیا ہے، حرم کے صحن میں طواف رُک گیا ہے تاہم بالائی منزلوں پر طواف جاری ہے۔حرمین شریفین پریزیڈنسی کے مطابق 1979 میں حرم شریف پر قبضے کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ طواف کا عمل روکا گیا ہے۔یاد رہے سعودی وزارت داخلہ نے گزشتہ روز اپنے شہریوں اور مملکت میں مقیم غیر ملکیوں کے بھی عمرہ ادا کرنے اور روضہ رسول ﷺ کی زیارت پر پابندی عائد کردی تھی۔
سعودی حکام کا کہنا ہے کہ خانہ کعبہ کا طواف رکا نہیں بلکہ ٹاپ فلور پر طواف جبکہ مسجد حرام میں نماز کی ادائیگی بھی جاری ہے تاہم راؤنڈ فلور سمیت دیگر فلورز کو ڈس انفیکشن کے عمل کیلئے عارضی بند کیا گیا ہے۔
سعودی حکام نے کہا ہے کہ فیصلہ عمرہ زائرین کے تحفظ کیلئے کیا گیا ہے۔ حکومت نے زائرین کو کرونا وائرس سے بچانے کیلئے مسجد حرام اور مسجد نبوی میں داخلہ عارضی بند کیا۔ مسجد حرام اور مسجد نبوی کی حدود میں کرونا سے بچاؤ کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ اقدامات مکمل ہوتے ہی جلد حرم کو داخلے کیلئے کھول دیا جائے گا۔ سعودی حکام دونوں مساجد میں جائے نماز اور فرش کی کلیننگ کا کام جاری ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *