سندھ کے سوا پاکستان میں کورونا کی روک تھام کی صورتحال بہتر ہوئی، اسد عمر

حفاظتی اقدامات کی وجہ سے جون کے وسط کے مقابلے آج اعداد و شمار بہتر ہیں، وفاقی وزیر

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن)وفاقی وزیر نے اسد عمر نے کہا کہ پاکستان میں اسمارٹ لاک ڈاؤن اور حفاظتی تدابیر اپنانے سے مجموعی طور پر کورونا وائرس کی روک تھام کی صورتحال بہتر ہوئی ہے لیکن سندھ بالخصوص کراچی میں بہتری نظر نہیں آرہی۔
اسلام آباد میں میڈیا بریفنگ کے دوران اسد عمر نے بتایا کہ ملک میں ایس او پیز پر عمل درآمد سے متعلق ہرہفتے جائزہ لیا جاتا ہے، جون کے وسط میں 20 شہروں میں ہاٹ اسپاٹ کی نشاندہی کی گئی تھی لیکن جون کے وسط کی نسبت اسپتالوں میں کورونا مریضوں کی تعداد کم ہے۔انہوں نے کہا کہ کورونا سے متعلق صورتحال میں بہتری نظر آرہی ہے اور ایس او پیز پر عمل درآمد بہتر ہونے سے صورتحال بہتر ہوئی ہے، ملک بھر میں آج اسپتالوں میں مریضوں کی تعداد، آکسیجن کی ضرورت والے افراد کی تعداد جون کے وسط سے کم ہے، اگر حالات مناسب رہے تو جولائی کے آخر میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 4 لاکھ تک ہو گی۔وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ عوام نے ایس او پیز پر عمل درآمد بہتر بنایا جس سے وبا کم ہوئی ہے، اگر انتظامی کارروائی نہیں کریں گے تو ہوسکتا ہے کہ جولائی تک 12 لاکھ افراد کورونا سے متاثر ہوں، ہم سب کے ہاتھ میں ہے کہ اس وبا سے اپنے آپ کو بچا سکیں، زیادہ تر افراد نے حکومت اور ڈاکٹرز کی ہدایات پر عمل کیا۔
اسد عمر نے مزید کہا کہ صرف کراچی میں بہتری نظر نہیں آئی جس کے لیے سندھ حکومت کے ساتھ مل کر حکمت عملی بنا رہے ہیں، سندھ میں مزید کتنا بہتر کام ہوسکتا ہے آج شام پھر مشاورت ہوگی۔واضح رہے کہ ملک میں کورونا کیسز کی تعداد 2 لاکھ 21 ہزار سے زائد ہے اور 4500 سے زائد افراد جاں بحق ہوچکے ہیں جب کہ سندھ میں کیسز کی تعداد 89 ہزار سے زائد ہے جن میں نصف سے زائد کیسز کا تعلق کراچی سے ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *