آصف علی زرداری کو جیل سے پمز ہسپتال منتقل کر دیا گیا

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری کو پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز) منتقل کردیا گیا۔
احتساب عدالت اسلام آباد میں جعلی اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت ہوئی تو آصف زرداری اور فریال تالپور کو پیش کیا گیا۔ عدالت نے دونوں ملزمان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 12 نومبر تک توسیع کردی۔
عدالت میں پیشی کے بعد انتظامیہ نے آصف زرداری کو پمز اسپتال منتقل کردیا۔ ترجمان پمز ڈاکٹر وسیم خواجہ نے آصف علی زرداری کو اسپتال منتقل کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ انہیں شعبہ امراض قلب میں منتقل کیا گیا جہاں ان کے میڈیکل ٹیسٹ کئے جارہے ہیں۔ ان کا بلڈ پریشر، شوگر اور کمر کی تکلیف کا معائنہ کیا جائے گا۔
ضلعی انتظامیہ نے پمز اسپتال کو سب جیل قرار دے دیا ہے۔ میڈیکل بورڈ نے آصف زرداری کو جیل سے اسپتال منتقل کرنے کی سفارش کی تھی جس کی روشنی میں جیل حکام نے آصف زرداری کو احتساب عدالت سے اسپتال منتقلی کے لیے انتظامیہ کو خط لکھا تھا۔

نجی ٹی وی اپنی رپورٹ میں ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ آصف زرداری کے طبی معائنے کیلئے 4رکنی میڈیکل بورڈ تشکیل دیدیا گیا ہے۔میڈیکل بورڈ میں شعبہ نیورو سرجری، قلب، میڈیسن کے ماہرین شامل کیے گئے ہیں۔ پروفیسر شجیع صدیقی چار رکنی میڈیکل بورڈ کے سربراہ مقرر ہوگئے ہیں۔میڈیکل بورڈ میں ڈاکٹر نعیم ملک، ڈاکٹر عامر شاہ اور ڈاکٹر ذوالفقار غوری شامل ہیں۔ میڈیکل بورڈ نے آصف زرداری کا طبی معائنہ کر لیا ہےاور آصف زرداری کو زیرعلاج رکھنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔پمز اسپتال ذرائع کا کہناہے کہ سابق صدر کا بلڈپریشر، شوگر ٹیسٹ کر لیا گیا ہے۔ سابق صدر کا فشار خون یعنی بلڈ پریشر نارمل جبکہ بلڈ شوگرمقررہ معیار سے کم ہے۔آصف زرداری کے ایکسرے، ای سی جی ٹیسٹ مکمل ہوگئے ہیں جبکہ طبی تجزیے کے لئے خون اور پیشاب کے نمونے بھی حاصل کرلیے گئے ہیں۔ ذرائع کا کہناہے کہ آصف زرداری کو کمر میں شدید درد کی شکایت ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *