منی لانڈرنگ کی رقم بیرون ملک بھیجنے کاکیس ،خانانی اینڈکالیااسکینڈل میں تمام ملزمان بری

کراچی: (پاکستان فوکس آن لائن) سندھ ہائیکورٹ نے خانانی اینڈ کالیا اسکینڈل میں ملوث تمام ملزمان کو بری کردیاہے۔ سندھ ہائیکورٹ نے 8سال بعد فیصلہ سنادیا ۔ہائیکورٹ نے بینکنگ کورٹ کے خلاف ایف آئی اے کی اپیل پر فیصلہ سنادیا۔ 2011 بینکنگ کورٹ نے 8ملزمان کو بری کیا تھا جسے سندھ ہائیکورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔وکیل صفائی حمل زبیدی نے اپنے دلائل میں کہا کہ مقدمہ میں ٹرائل کورٹ میں 100گواہ بلائے گئے۔ 42 گواہان نے ملزمان کے حق میں گواہیاں دی ۔سیشن عدالت میں بھی حوالہ ہنڈی ثابت نہیں ہوئی۔الزنونی ایکس چینج دبئی کی کمپنی ہے جسکا ملزمان سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ڈپٹی اٹارنی جنرل اور ایف آئی کی جانب سےڈپٹی ڈائریکٹر پیش ہوئے۔منی لانڈرنگ اسکینڈل میں ملزمان 8 کو نامزد کیا گیا تھا۔ ایک ملزم جاوید خانانی نے خود کشی کرلی تھی۔ دیگر ملزمان میں حنیف کالی ،مناف کالیا۔ جاوید خانانی، عاطف عزیز پولانی شامل تھے۔ مقدمے میں بینکرز سید مسعود عباس ، سید وجاہت علی، تسلیم احمد اور عارف الرحمان کو بھی شامل کیا گیا تھا۔یادرہے گزشتہ برس نومبر میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ساؤتھ سارہ جنیجونےاوپن کورٹ میں خانانی اینڈکالیاگروپ حوالہ ہنڈی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے عاطف پولانی سمیت تین ملزمان کو بری کرنے کا حکم دیا تھا۔عدالت نے دس سالوں کے بعدعاطف پولانی کو بری کیا، بری ہونے والوں میں عاطف پولانی کے ساتھی عمران اور دانش بھی شامل تھے۔یاد رہے کہ خانانی اینڈ کالیا منی ایکسچینج کیخلاف 2008 میں ایف آئی اے نے تحقیقات شروع کی تھیں اورعاطف پولانی پرفارن ایکٹ ریگولیشن 1947 کے تحت 53کروڑ ہنڈی کے ذریعے بیرونِ ملک کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔ملزمان پرچوہتر بے نامی اکاؤنٹس کھولنے کے بھی الزامات تھے اور ان کے خلاف 12گواہان نےعدالت میں بیان ریکارڈ کروائےتھے۔ البتہ ایف آئی اے کےاہنا گواہ حیدرعلی مجسٹریٹ کےسامنے اپنےتحریری بیان سےمنحرف ہوگیاتھا۔تحقیقات کے بعد اس وقت کےتفتیشی افسرانوارالحق قریشی کی جانب سے تینوں ملزموں کو مقدمے میں نامزد کیا گیا تھا اور مالیاتی اسکینڈل میں ملوث خانانی اینڈکالیامنی ایکسچینج کےرکن عاطف پولانی کومئی 2009 میں دبئی ائیرپورٹ سےانٹرپول کے ذریعے گرفتارکیاگیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *