جج ارشد ملک کی وجہ سے ایماندار ججوں کے سر شرم سے جھک گئے، چیف جسٹس

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن)سپریم کورٹ نے جج ویڈیو سکینڈل کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کیس کا فیصلہ دو سے تین روز میں سنائیں گے۔
جج ارشد ملک ویڈیو سکینڈل کیس کی سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس نے کہا جج ارشد ملک کی خدمات فوری طور پر واپس کی جائیں، حکومت ارشد ملک کو واپس نہ بھیج کر تحفظ دے رہی ہے، حکومت انہیں وفاق کے پاس رکھ کر کیا کرنا چاہتی ہے، ایسے کردار کے حامل جج کو بہت لوگ بلیک میل کر سکتے ہیں۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ناصر جنجوعہ نے دعویٰ کیا ارشد ملک کو انہوں نے تعینات کروایا، کیا وہ مبینہ با اثر شخص سامنے آیا جس نے تعینات کروایا ؟ ارشد ملک کے کردار سے ججوں کے سر شرم سے جھک گئے، عجیب جج ہیں فیصلے کے بعد مجرموں کے گھر چلے جاتے ہیں، جج ارشد ملک کے کردار کے حوالے سے بہت سی باتیں دیکھنے والی ہیں، عدلیہ کی حد تک معاملہ ہم خود دیکھیں گے۔
ایف آئی اے کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جج ارشد ملک نے رواں سال دو عمرے کئے، وہ 23 مارچ سے 4 اپریل 2019 اور 28 مئی سے 8 جون تک سعودی عرب میں رہے۔ مریم نواز نے اپنے بیان میں کہا جج ارشد ملک کی 16 سال قبل بنائی گئی ویڈیو دیکھی نہ حاصل کی، جج کی مبینہ ویڈیو 2003 میں ملزم میاں طارق نے بنائی، ایف آئی اے نے ویڈیو کا فرانزک آڈٹ بھی کرا لیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *