وزیراعظم عمران خان کی عید کی چھٹیوں کے دوران لوڈشیڈنگ نہ کرنے کی ہدایت

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس کی کارروائی کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کابینہ کو سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس بارے آگاہ کیاگیا، یکساں انصاف کی فراہمی کامینڈیٹ لے کر اقتدارمیں آئے ، گلے سڑے سسٹم سے نجات دلانے کیلئے اقتدار میں آئے ہیں، کوئی بھی آئین و قانون سے بالا تر کام کرے گا تو قانون حرکت میں آئے گا ۔2 معزز ججز سے متعلق شکایات آئی تھیں جو سپریم جوڈیشل کونسل کو بھجوا دی گئی ہیں، سپریم جوڈیشل کونسل نیوٹرل فورم ہے،ہم نے آئینی حدود سے باہر کوئی فیصلہ نہیں کیاپاکستان کا ہر شہری قانون کے تابع ہے، عدلیہ کی شکایات کو عدلیہ ہی دیکھے گی ، ہم نے بھٹو کے دیئے ہوئے آئین سے ہی یہ راستہ نکالا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ایسٹس ریکوری یونٹ نے تصدیق کے بعد شکایات سپریم جوڈیشل کونسل کو بھجوائی ہیں۔فردوس عاشق اعوان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی کابینہ نے کشمیری عوام، فلسطین کے مظلومین کا مقدمہ لڑنے پر وزیر اعظم کو خراج تحسین پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں 12 نکاتی ایجنڈے پر بحث کی گئی۔ وزیر اعظم گورننس کے نظام کو بہتر بنانے کی کوشش کر رہے ہیں جبکہ سپریم جوڈیشل کونسل کو بھیجے گئے ریفرنس سے کابینہ کو آگاہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے عزم کا اعادہ کیا کہ قانون سے بالاتر کوئی نہیں ہے۔
وفاقی کابینہ نے چینی شہریوں کے لیے ورک ویزے کی منظوری دے دی تاہم چینی شہریوں کو یہ سہولت ایک دفعہ ہی جاری کی جائے گی۔ وزیر اعظم عمران خان نے عید کی چھٹیوں کے دوران لوڈشیڈنگ نہ کرنے کی ہدایت کی۔ وفاقی کابینہ نے اضافی حج کوٹہ میں سے 40 فیصد نجی ٹورز آپریٹر کو دینے کی منظوری دے دی جبکہ عتیق احمد کو وفاقی تعلیمی بورڈ کا سیکرٹری تعینات کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔ کابینہ نے بچوں کے حقوق پر قومی کمیشن بنانے کی تجویز کو مؤخر کر دیا۔اجلاس میں وزیر اعظم نے وفاقی وزیر برائے موسمیات زرتاج گل سے نیکٹا کے معاملے پر ناراضگی اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو ایسا نہیں کرنا چاہیے تھا۔ وزیر اعظم نے وزرا کو اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے سے بھی منع کیا۔واضح رہے کہ زرتاج گل نے اپنی اسسٹنٹ پروفیسر بہن کو نیکٹا کا ڈائریکٹر لگانے کے لیے سیکرٹری داخلہ کو خط لکھا تھا اور اس معاملے کو سوشل میڈیا پر بہت زیادہ اچھالا گیا۔ جس کے بعد وزیر اعظم نے زرتاج گل کو اپنے خط سے دستبردار ہونے کا اعلان کرنے کی ہدایت کی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *