پاکستان کا مقبوضہ وادی میں کھلی کچہری کا موقع فراہم کرنے کا مطالبہ

شاہ محمود قریشی کا بھارتی وزیر دفاع کو کشمیر کے معاملے پر کھلا چیلنج

اسلام آباد : (پاکستان فوکس آن لائن)پاکستان نے مقبوضہ وادی میں کھلی کچہری کا موقع فراہم کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے بھارتی اقدامات کو کوئی کشمیری تسلیم نہیں کرتا، بھارت کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئے گی، بھارت کے ہمسایوں کو ہندوتوا سوچ پر تشویش ہے۔
وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارتی وزیر دفاع مظفرآباد آ کر دیکھ لیں کتنے کشمیری ان کے ساتھ ہیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی وزیر دفاع کے من گھڑت بیان کا دوٹوک جواب دیتے ہوئے کہا کہ کشمیری بھارتی سرکار سے متنفر ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارتی وزیر دفاع مظفر آباد آ کر دیکھ لیں کتنے کشمیری ان کے ساتھ ہیں اور ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارتی حکمران وزیر اعظم عمران خان یا مجھے بھی سرینگر آنے کی دعوت دیں۔گزشتہ روز پاکستان نے بھارتی وزیر دفاع کے آزاد کشمیر سے متعلق بیانات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے یکسر مسترد کر دیا تھا۔
شاہ محمود قریشی نےکہا کہ بھارت 7 بار سلامتی کونسل کا ممبر رہا ہے، انڈیا کے سلامتی کونسل ممبر بننے سے کوئی قیامت نہیں آئے گی، بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کو اہمیت کیوں نہیں دے رہا، میرے خطوط سلامتی کونسل کے ریکارڈ کا حصہ ہیں، توقع تھی کووڈ 19 کے بعد بھارتی رویے میں نرمی آئے گی لیکن بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں ظلم برقرار ہے۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا او آئی سی ممالک کو بھی خطوط لکھے ہیں، دلی کے واقعات ہم بھولے نہیں، آپ اسے چھپا نہیں سکتے، شہریت بل پر بھارتی اپوزیشن سراپا احتجاج ہے، بھارت چین اور نیپال کے ساتھ گفت و شنید کے وعدے کرتا رہا، کونسا ملک ہے جو آج بھارتی اقدامات سے مطمئن ہو، بھارت کے ہمسایوں کو ہندوتوا سوچ پر تشویش ہے، بھارت انسانی حقوق کو پامال کر رہا ہے، دنیا دیکھ رہی ہے، بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جا رہا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *