حکومت کا مریم نواز سے متعلق الیکشن کمیشن کا فیصلہ چیلنج کرنیکا اعلان

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن) وفاقی کابینہ نے بے نامی ایکٹ کے تحت خصوصی بینچ بنانے کی منظوری دے دی۔وزیراعظم عمران خان کی سربراہی میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں 19نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں وفاقی کابینہ نے بے نامی ایکٹ کے تحت خصوصی بینچ بنانے کی منظوری دے دی۔ اس کے علاوہ محکمہ موسمیات کے ملازمین پر لازمی سروس ایکٹ لاگو کرنے اور سول سروس ملازمین کے لیے پرفارمنس مینجمنٹ سسٹم لانے کی بھی منظوری دے دی۔
کابینہ اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی تازہ صورتحال کا جائزہ لیا گیا، اس موقع پر وزیراعظم نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں تقریر سے متعلق نکات پر کابینہ ارکان سے مشاورت کی جب کہ وزیراعظم کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سمیت عالمی رہنماؤں سےشیڈول ملاقاتوں پر بھی بات چیت کی گئی۔کابینہ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کے دوران معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیراعظم کشمیریوں کے سفیر بن کر امریکا جارہے ہیں، وزیر اعظم جنرل اسمبلی میں مسئلہ کشمیر کو بھرپور طریقے سے اجاگر کریں گے، وزیراعظم نے کابینہ و اپنے مجوزہ دورہ امریکا پر اعتماد میں لیا ہے۔معاون خصوصی نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق ریاست کا چوتھا ستون میڈیا ہے، وزیر اعظم پاکستان اور موجودہ حکومت میڈیا کی آزادی پر یقین رکھتی ہے، کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ خصوصی میڈیا ٹربیونلز قائم کیے جائیں۔ ٹربیونلز کا مقصد میڈیا سے متعلق شکایات کا جلد ازالہ کرنا ہے۔
معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ حکومت مریم نوازسےمتعلق الیکشن کمیشن کافیصلہ چیلنج کرےگی۔
وزیراعظم کی زیر صدارت کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ اجلاس میں19 نکاتی ایجنڈےپر غور کیا گیا، الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف اپیل دائرکرنے کا فیصلہ کیا ہے، حکومت مریم نواز کی نائب صدارت برقرار رکھنے کا الیکشن کمیشن کا فیصلہ چیلنج کرے گی۔
معاون خصوصی نے کہا کہ سپریم کورٹ کا واضح فیصلہ ہے کہ سزا یافتہ شخص کسی عہدے پر فائز نہیں ہو سکتا، اس فیصلے میں مانا گیا ہے کہ مریم نواز سزا یافتہ ہیں، اور وہ کسی جلسے جلوس اور سیاسی سرگرمی میں حصہ نہیں لےسکتیں، الیکشن کمیشن کا فیصلہ سپریم کورٹ کے فیصلےکی خلاف ورزی ہے، فیصلےمیں نائب صدر کےعہدے کو غیرفعال کہا گیا ہے۔
فردوس عاشق نے بتایا کہ حکومت میڈیاکی خودمختاری پریقین رکھتی ہے، اجلاس میں میڈیا کے معاملات پر غور کیا گیا ہے، میڈیا کو ذمہ دار بنانے اور میڈیا کے شفاف کردار کو فعال بنانے اور احتسابی عمل کا آغاز کیا جارہا ہے، اس کے لئے حکومت نے خصوصی میڈیا ٹریبونلز بنانے کا فیصلہ کیا ہے، میڈیا کے حوالے سے جو بھی شکایت ہے وہ عدلیہ کے ماتحت میڈیا ٹربونل سنے گا، اگر میڈیا کسی پر الزام لگاتا ہے وہ معاملہ میڈیا ٹرائبیونلز دیکھیں گے، اور میڈیا ٹریبونل 90 روزمیں فیصلے کرنے کا پابند ہوگا، میڈیا ٹرائبیونلز کی نگرانی اعلی عدلیہ کرے گی۔
معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے کابینہ کو مجوزہ دورہ امریکا پر اعتماد میں لیا، وزیراعظم عمران خان کشمیریوں کے سفیر بن کرامریکا جا رہے ہیں، اپنے دورے میں اہم رہنماؤں سےملاقاتیں کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *