بھارتی آرمی ایکٹ میں ترمیم، بپن راوت کی چیف آف ڈیفنس اسٹاف نامزد

نئی دہلی: (پاکستان فوکس آن لائن)بھارت نے اپنے آرمی ایکٹ میں ترمیم کر دی ہے جس کے بعد ریٹائرمنٹ سے ایک روز قبل بھارتی آرمی چیف بپن راوت کو بھارت کا پہلا چیف آف ڈیفنس اسٹاف بنا دیا گیاہے ۔
بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی وزارت دفاع کی جانب سے آرمی روزل 1954 میں ترمیم کی گئی ہے جس کی منظوری بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی زیر صدارت اجلاس میں دی گئی ۔بھارتی وزارت دفاع نے آرمی ایکٹ میں ترمیم کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے ۔ بھارتی آرمی چیف بپن راوت کل 31 دسمبر کو عہدے سے ریٹائر ہو رہے تھے تاہم ترمیم کر دی گئی ہے ۔چیف آف ڈیفنس اسٹاف کیلئے زیادہ سے زیادہ عمرکی حد 65 سال رکھنے کیلئے قانون میں ترمیم کی گئی ہے ۔
واضح رہے کہ حکومت نے حالات کا بہانہ بنا کر معاملہ نمٹایا ہے اور ملازمت سے سبکدوشی سے ایک روز قبل بھارت کا پہلا چیف آف ڈیفنس اسٹاف نامزد کیا گیا ہے جبکہ سلامتی امور کی کمیٹی نے تاریخی فیصلہ لیتے ہوئے چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا عہدہ وجود میں لانے، ضابطے اور چارٹر کو منظوری دے دی ہے جبکہ وزیراعظم نریندرمودی کی صدارت میں ہونے والےاجلاس میں اس تجویزکو منظوری دی گئی ہے اورسی ڈی ایس کی تنخواہ تینوں افواج کے سربراہان کے برابر ہوگی۔
واضح رہے کہ بھارتی آرمی چیف بپن راوت نے جنرل دلبیر سنگھ کی ریٹائرمنٹ کے بعد 31 دسمبر 2016 کو عہدے کا حلف اٹھایا تھا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *