دنیا سے موازنہ کیا جائے تو پاکستان کے حالات بہتر ہیں، وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد: (پاکستان فوکس آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں پر من و عن عملدرآمد کرنے کی ہدایت کر دی۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت کورونا کی روک تھام کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا ،اجلاس میں صوبائی وزرا نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی ۔اس دوران معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر مرزا نے کورونا کی صورتحال پر بریفنگ دی۔چیئرمین این ڈی ایم اے جنرل افضل نے بھی کورونا سے نمٹنے کے لیے اقدامات اور سامان کی ترسیل سے متعلق بریفنگ دی۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں پر من و عن عملدرآمد کرنے کی ہدایت کی ۔بعد ازیں کورنا وائرس کی وبائی صورتحال پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ باقی دنیا سے موازنہ کیا جائے تو پاکستان کے حالات بہتر ہیں۔
تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کی شرح خدشات سے کم ہیں۔اسلام آباد میں کورونا وائرس کی صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ سوچا تھا کہ اب تک انتہائی نگہداشت یونٹس بھرجائیں گے لیکن ایسا کچھ نہیں ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کوئی بھی نہیں کہہ سکتا کہ یہ کورونا وائرس کب تک چلے گا جب تک اس کی ویکسین تیار نہیں ہوتی تب تک ساری دنیا کو بہت سوچ سمجھ کر چلنا ہوگا۔عمران خان نے کہا کہ ہم سب کو پہلے دن سے احساس ہے کہ جب لاک ڈاؤن ہوگا تو یومیہ اجرت پر کام کرنے والے مزدور، ریسٹورنٹ میں کام کرنے والے ویٹرز، ٹیکسی، رکشہ چلانے والے افراد سب سے زیادہ متاثر ہوں گے اس کے لیے ہم نے سب سے پہلے ایمرجنسی احساس پروگرام شروع کیا۔
وزیراعظم نے کہا کہ ڈاکٹر ثانیہ نشتر کو مبارکباد دیتے ہوئے کہ دنیا میں کہیں بھی مستحق افراد کو اتنا زیادہ پیسہ کہیں بھی تقسیم نہیں کیا گیا جو اایمرجنسی احساس پروگرام کے تحت کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ یہ پاکستان کے لیے فخر کی بات ہے کہ ایک ایسا پروگرام آٰیا جس میں کوئی امتیاز نہیں کیا گیا، کوئی سیاسی مداخلت نہیں تھی صرف اور صرف ڈیٹا دیکھا گیا کہ غریب طبقہ کون ہے، سب سے پیسے سندھ میں دیے گئے۔عمران خان نے کہا کہ مجھے خوشی ہوئی کہ مشکل حالات میں مستحق افراد کو پیسے دیے گئے، اب تک 66 لاکھ خاندانوں میں 81 ارب روپے تقسیم کیے گئے ہیں اور کوشش ہے کہ 7 سے 10 روز میں ایک کروڑ 20 لاکھ تک پہنچ جائے۔اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم ریلیف فنڈ شروع کرتے ہوئے فیصلہ کیا تھا کہ یہ پیسہ صرف ان لوگوں کے لیے رکھا جائے گا جو کورونا وائرس کی وجہ سے بے روزگار ہوئے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے سوچا کہ بیروزگار ہونے والے افراد تک کیسا پہنچا جائے گا اس کے لیے 2 طریقے نکالے ایک تو ہم ایس ایم ایس مہم شروع کریں گے جس کے لیے انہیں اپنی بے روزگاری کا ثبوت دینا پڑے گا۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم کورونا ریلیف فنڈ کے تحت بے روزگار افراد کے لیےجو ایک روپیہ خرچ کیا جائے گا تو حکومت اس وقت 4 روپے دے گی یعنی آپ جو فنڈ میں ایک روپے دیں گے تو حکومت اسے 4 روپے کرکے دے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *